سیاسی رہنماؤں سے سیکیورٹی واپس لینے کا معاملہ ، شہباز شریف نے تحریک انصاف حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیا 

سیاسی رہنماؤں سے سیکیورٹی واپس لینے کا معاملہ ، شہباز شریف نے تحریک انصاف ...
سیاسی رہنماؤں سے سیکیورٹی واپس لینے کا معاملہ ، شہباز شریف نے تحریک انصاف حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیا 

  

 لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)مسلم لیگ ن کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں شہبازشریف کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف(پی ٹی آئی) حکومت کاخیبر پختونخوا(کے پی کے) میں مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے سیکیورٹی واپس لینے کا فیصلہ جرم ہے۔

تفصیلات کے مطابق مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر اپنے ٹویٹ میں شہباز شریف کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی حکومت کا خیبر پختونخوا  میں مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں سے سیکیورٹی واپس لینے کا فیصلہ جرم ہے، خاص طور پر جب کہ آفتاب شیرپاؤ، امیر مقام اور میاں افتخار پر پہلے ہی حملہ ہوچکا ہے۔انھوں نے سوال پوچھتے ہوئے لکھا ہے کہ اگر کوئی ناخوشگوار واقعہ ہوا تو اس کا ذمہ دار کون ہوگا؟۔

واضح رہے کہ خیبرپختونخوا حکومت نے 29 سیاسی رہنماؤں اور اہم شخصیات سے پولیس سیکیورٹی واپس لیتے ہوئے ایلیٹ فورس کے58 اہلکاروں کو ہیڈ کوارٹر طلب کرلیا ہے،جن سیاسی رہنماؤں سے سیکیورٹی واپس لی گئی ہے ان میں عوامی نیشنل پارٹی(اے این پی) کے سابق وزیر اعلیٰ امیر حیدر ہوتی ،میاں افتخار حسین ،ایمل ولی خان،  قومی وطن پارٹی کے سربراہ اور سابق وفاقی وزیر داخلہ آفتاب احمد خان شیرپاؤ ،مسلم لیگ ن  کے امیر مقام،پاکستان تحریک انصاف کے ایم این اے انور تاج اور سینٹر ایوب آفریدی سمیت دیگر شامل ہیں۔ 

مزید :

قومی -