عدت ذاتی معاملہ نہیں یہ اللہ تعالیٰ کا طے شدہ ہے، زاہدآصف ایڈووکیٹ

عدت ذاتی معاملہ نہیں یہ اللہ تعالیٰ کا طے شدہ ہے، زاہدآصف ایڈووکیٹ
عدت ذاتی معاملہ نہیں یہ اللہ تعالیٰ کا طے شدہ ہے، زاہدآصف ایڈووکیٹ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)بانی پی ٹی آئی عمران خان اور بشریٰ بی بی کی سزا کیخلاف مرکزی اپیلوں پر سماعت کے دوران خاور مانیکا کے وکیل زاہد آصف ایڈووکیٹ نے کہا کہ میڈیا کی جانب سے ہوابنائی گئی پاکستان میں بھی ایسے ایسے کیسز ہیں،ایک خاتون نے تھپڑ مار دیا اس پر ایک جج کو میڈیا کی ہائپ پر سزا ہو گئی،میڈیا پر کہا گیا کہ کیس اڑا گیا میں نے معاون کیل سے پوچھا کیا فیصلہ ہو گیا، عدت ذاتی معاملہ نہیں یہ اللہ تعالیٰ کا طے شدہ ہے۔

نجی ٹی وی چینل جیو نیوز کے مطابق ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ میں بانی پی ٹی آئی عمران خاور بشریٰ بی بی کی سزا کیخلاف مرکزی اپیلوں پر سماعت ہوئی، ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج افضل مجوکہ نے اپیلوں پرسماعت کی،خاور مانیکا کے وکیل کے معاون وکیل نے 2درخواستوں پر دلائل  دیتے ہوئے کہاکہ میڈیا کے ذریعے ایک غلط فہمی پیدا کی جارہی ہے کہ عورتوں کی شادی نہیں ہوگی،ہائی پروفائل کیسز میں میڈیا دیکھتا ہے کہ عوام کا رجحان کس سائیڈ پر ہے،میڈیا  کسی بھی واقعے کو سنسنی خیز طور پر پھیلا تا ہے،فیصلہ ہونے سے پہلے میڈیا پر ٹرائل آ جاتا ہے،یہ کیس بھی شروع سے میڈیا کی زینت بنا ہوا ہے،ملزم کا بھی میڈیا ٹرائل نہیں ہونا چاہئے میں اس حق میں نہیں۔

سلمان اکر م راجہ نے کہاکہ میں نے سپریم کورٹ میں ملٹری ٹرائل کیس میں پیش ہونا ہے جواب الجواب کیلئے آجاؤں گا، سلمان اکرم راجہ عدالت سے اجازت لے کرروانہ ہو گئے،زاہدآصف ایڈووکیٹ نے کہا کہ میڈیا کی جانب سے ہوابنائی گئی پاکستان میں بھی ایسے ایسے کیسز ہیں،ایک خاتون نے تھپڑ مار دیا اس پر ایک جج کو میڈیا کی ہائپ پر سزا ہو گئی ،میڈیا پر کہا گیا کہ کیس اڑا گیا میں نے معاون کیل سے پوچھا کیا فیصلہ ہو گیا، عدت ذاتی معاملہ نہیں یہ اللہ تعالیٰ کا طے شدہ ہے۔

معاون وکیل نے کہاکہ پاکستان کے معاشرے میں سکینڈل کی بھوک ہے،میڈیا پہلے سے ذہن بنا رہا ہے کہ ملزم کون ہے،اسامہ بن لان اگر مارا نہ جاتا تو آج اس کا بھی کیس بنتا کوئی وکیل ہوتا۔