چیف جسٹس نے انٹرنیٹ پر موجود گستاخانہ مواد کے حوالے سے از خود نوٹس لے لیا

چیف جسٹس نے انٹرنیٹ پر موجود گستاخانہ مواد کے حوالے سے از خود نوٹس لے لیا
چیف جسٹس نے انٹرنیٹ پر موجود گستاخانہ مواد کے حوالے سے از خود نوٹس لے لیا

  

لندن ،اسلام آباد(بیورورپورٹ)چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے انٹرنیٹ پر گستاخانہ مواد کے حوالے سے برطانیہ میں مقیم پاکستانی بیرسٹر امجد ملک کی درخواست پر از خود نوٹس لے لیا ہے اور ایک ہفتے کے اندر چیئرمین پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) سے رپورٹ طلب کرلی ہے ۔درخواست گزاراور اے پی ایل برطانیہ کے صدر بیرسٹر امجد ملک نے موقف اپنایاکہ انٹر نیٹ ڈومین میں بڑھتی ہوئی مذہبی توہین مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کر رہی ہے، یو ٹیوب پر پاکستان میں پہلے ہی پابندی ہے ۔ پابندی کے بعد، وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی، پی ٹی اے، وفاقی تحقیقاتی ایجنسی، وزارت مذہبی امور، انٹیلی جنس ایجنسیوں اور دیگر سٹیک ہولڈرز کے نمائندوں پر مشتمل ایک بین الوزارتی کمیٹی اس معاملے پر غور کرنے کیلئے تشکیل دی گئی جورضاکارانہ طور پرتوہین آمیز ویڈیوزختم کرانے میں ناکام رہے، جس سے اس کو بلاک کرنے کے لئے ایک راستہ مل گیا ۔اُنہوں نے کہاکہ وزیر اعظم نے اپنی حتمی رپورٹ میں تجویز پیش کی ایک آئی ٹی وزارت سرکاری گوگل سے گستاخانہ ویڈیو دور کرنے کے لئے اتفاق حاصل کرنے کا قانونی طریقے سے امریکہ اور پاکستان کے درمیان باہمی قانونی معاہدہ ہونے کی ضرورت ہے تاہم پاکستانی دفتر خارجہ کی انتظامیہ کی جانب سے معاہدہ شروع نہیں کیا گیا تھا۔ یادرہے کہ روزنامہ پاکستان میں چند یوم قبل بیرسٹر امجد ملک کی طرف سے سپریم کورٹ کو لکھے جانے والے خط کے مندرجات شائع کر چکا ہے۔

مزید :

اسلام آباد -