سید علی گیلانی کا پلوامہ میں شہید ہونے والے نوجوانوں کو خراج عقیدت

سید علی گیلانی کا پلوامہ میں شہید ہونے والے نوجوانوں کو خراج عقیدت

  

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی نے کاکہ پورہ پلوامہ میں شہید ہوئے دو نوجوانوں کو شاندار خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے افسوس کا اظہار کیا ہے کہ وہ شہید بلال احمد بٹ کی نماز جنازہ پڑھانے کی آخری خواہش کو گھر میں نظربند ہونے کی وجہ سے پورا نہیں کرسکے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق جلوس جنازہ سے سرینگر سے ٹیلیفونک خطاب کرتے ہوئے سید علی گیلانی نے کہا کہ بھارت کی ضد اور ہٹ دھرمی کی وجہ سے جموں کشمیر میں بڑے پیمانے پر انسانی زندگیوں کا اتلاف جاری ہے اورمقبوضہ علاقے میں لوگوں کا امن وچین غارت ہورہا ہے۔

سید علی گیلانی نے کہا کہ ہمارے نوجوان آزادی کی جدوجہد میں اپنی جوانیوں کی قربانیاں پیش کررہے ہیں اور ہم پر ایک بھاری قرض اور ذمہ داری ڈال دیتے ہیں کہ ہم ان کی قربانیوں کی حفاظت کریں ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں منعقد کرائے جانے والے انتخابی ڈراموں کو بین الاقوامی فورموں میں فوجی قبضے کی توثیق کے طور پر پیش کرتا ہے۔ اس صورت میں ووٹ ڈالنا ہماری جدوجہد کے لیے بہت نقصان دہ ثابت ہوجاتا ہے جس سے آزادی کی منزل طویل ہوجاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ قابض انتظامیہ نے مجھے پچھلے مسلسل چار سال سے پابند سلاسل بنایا ہوا ہے اور اس سال 16اپریل کو دہلی سے لوٹنے کے بعدمجھے مسلسل اپنے گھر میں نظربندکیا گیا ہے ۔سیدعلی گیلانی نے کہا کہ کشمیریوں کو بی جے پی کے برسرِ اقتدار آنے سے گھبرانا نہیں چاہیے، کیونکہ یہ پارٹی جو کچھ اعلان کرکے کرتی ہے، کانگریس بھی وہی کچھ کرتی تھی البتہ ان کا محض لب ولہجہ مختلف تھا۔ انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ بھارت کے سارے حکمران کشمیر کے بارے میں حقیقت پسندانہ رویہ اختیار کرنے کے بجائے ہٹ دھرمی کا مظاہرہ کرتے ہیں اور وہ کسی جواز اور دلیل کے بجائے فوجی قوت کے ذریعے کشمیر پر اپنا قبضہ جاری رکھنا چاہتے ہیں اور اس پالیسی کی وجہ سے نہ صرف کشمیری قوم مصائب کی شکار ہے بلکہ برصغیر کے کروڑوں عوام بھی بے شمارمسائل سے دوچار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر وہ رستا ہوا ناسور ہے جو دونوں ممالک کے امن، استحکام، ترقی اور خوشحالی میں سب سے بڑی رْکاوٹ بنا ہوا ہے۔ سید علی گیلانی کے فورم کی طرف سے عبدالاحد پرہ، غلام محی الدین اندرابی، فیروز احمد خان اور عبدل رشید ڈار نے جنازے میں شرکت کی اور شہید کے لواحقین کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا۔

مزید :

عالمی منظر -