سوشل سیکورٹی کے فیلڈ افسران کو کی غفلت ہر گز برداشت نہیں کیجائیگی،راجہ اشفاق

سوشل سیکورٹی کے فیلڈ افسران کو کی غفلت ہر گز برداشت نہیں کیجائیگی،راجہ اشفاق

  

لاہور(جنرل ر پورٹر)صوبائی وزیر محنت و انسانی وسائل راجہ اشفاق سرور نے کہا ہے کہ سوشل سیکورٹی کولیکشن ، بھٹہ و دیگرمزدوروں کی رجسٹریشن ، صنعتی یونٹس کی انسپکشن و تصدیق کے امور میں غفلت اور سستی کا مظاہرہ کرنے والے فیلڈ افسران کو کسی دبا¶ یا سفارش میں لائے بغیر تبدیل کردیا جائے گا جبکہ نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے افسران کو اعزاز سے نوازا جائے گا-انہوں نے یہ بات سوشل سیکورٹی ہیڈ آفس میں سوشل سیکورٹی کولیکشن و دیگر امور کا جائزہ لینے کے لئے صوبہ بھر کے فیلڈ افسران کے منعقدہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی- کمشنر سوشل سیکورٹی و قائمقام سیکرٹری لیبر فرحان عزیز خواجہ ، وائس کمشنر سوشل سیکورٹی شاہد عادل، ڈی جی سوشل سیکورٹی طارق اعوان کے علاوہ سرگودھا، شیخوپورہ، فیصل آباد، ڈی جی خان، ملتان، راولپنڈی، بہاولپور ، گوجرانوالہ سمیت صوبہ بھر سے ڈائریکٹر زریکوری نے اجلاس میں شرکت کی-اجلاس میں گزشتہ دس ماہ میں مختلف صنعتی و دیگر اداروں سے سوشل سیکورٹی اور پنجاب ایجوکیشن سیس فنڈکولیشن ، صنعتی اداروں کی انسپکشن و تصدیق ، فنکشنل و نان فنکشنل یونٹس کے درست اعداد وشمار اکٹھا کرنے سمیت مختلف امور بارے بریفنگ دی گئی- اجلاس کوبتایا گیا کہ ادارہ سوشل سیکورٹی نے گزشتہ دس ماہ کے دوران ریکوری کی مد میں بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کیااور مزید 2ماہ میں مقررکردہ اہداف ہر حال میں حاصل کرلئے جائیں گے- صوبائی وزیر راجہ اشفاق سرور نے سوشل سیکورٹی کولیکشن میں اضافے پر فیلڈ افسران کی کارکردگی کو سراہا تاہم انہوں نے صوبہ بھر میں صنعتی و تجارتی یونٹس کے تارزہ ترین اعداد و شمار نہ رکھنے ، ڈسٹرکٹ ویجیلنس کمیٹیوں کے اجلاس باقاعدگی سے منعقد نہ کروانے اور بھٹہ و دیگر مزدوروں کی رجسٹریشن میں سستی اور ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کرنے پر افسران کی سخت سرزنش کی اور ہدایت کی کہ صنعتی و تجارتی اداروں کا ریکارڈ ایک ماہ میں اپ ڈیٹ کرکے ہیڈ آفس بھجوایا جائے-انہوں نے بھٹوں اور دیگر اداروں کے مزدوروں کی سوشل سیکورٹی رجسٹریشن میں سست روی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ہدایت کی کہ فیلڈ افسران کی کارکردگی کا باقاعدگی سے پروفیشنل آڈٹ کرایا جائے- ناقص کارکردگی دکھانے والے فیلڈ افسران کو تبدیل کردیا جائے-انہوں نے کہا کہ افسران دفتروں میں بیٹھ کر ماتحت ملازمین کی رپورٹس پر انحصار کرنے کی بجائے خود متحرک ہوں اور فیلڈ میں نکلیں - انہوں نے کہا کہ فیلڈ افسران اپنے ایریازکے ہر صنعتی یونٹ اور ادارے کے بارے میں پوری طرح آگاہ ہوں کیونکہ وہ خود ہر ماہ مختلف اضلاع کا اچانک دورہ کرکے ریکارڈ چیک کرنے کے علاوہ ان یونٹس کی انسپکشن بھی کریں گے اور رجسٹریشن کے حوالے سے ان کی کارکردگی کا بھی جائزہ لیں گے-انہوں نے ہدایت کی کہ تمام اضلاع میں ڈسٹرکٹ ویجیلنس کمیٹیوں کا اجلاس باقاعدگی سے منعقد کیا جائے-راجہ اشفاق سرور نے اداروں کی رجسٹریشن کے حوالے سے دی جانے والی ایمنسٹی میں 3ماہ کی رعایت کی تجویز کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ مقررہ مدت کے بعد بھی رجسٹریشن نہ کروانے والوں کے ساتھ کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی-

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -