نوجوان کے متاثرہ خاندان کی حکومت سے مالی امداد کی اپیل

نوجوان کے متاثرہ خاندان کی حکومت سے مالی امداد کی اپیل

لاہور(کرائم سیل) نہر میں ڈوبنے والے محمد علی کے تایا محمد یار نے نمائندہ"پاکستان "سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ محمد علی خاندان کا واحد کفیل تھاجبکہ اس کے دو بھائی محمد شہباز اور شیراز ابھی چھوٹے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ متوفی کی شادی 2سال قبل ہوئی تھی اور اسکی بیوی امید سے تھی لیکن قسمت نے اسے بچے کی پیدائش سے پہلے ہی منو ںمٹی تلے دفن کردیا ہے ۔متاثرہ خاندا ن نے نے حکو مت سے دردمندانہ اپیل کی ہے کہ وہ بہت غریب ہیں لہذا ان کی مالی امداد کی جائے جس سے وہ اپنے بچوں کا پیٹ پال سکیں ۔انہوں نے مزید کہا کہ ارباب اختیار کو چاہیے کہ نہر کے کنارے بڑی باڑلگائی جائے تاکہ آئندہ کسی ماں کی گود نہ اجڑ سکے۔متوفی محمد علی کے بھائیوں شہبار اور شیراز کا کہنا تھا کہ 3سال قبل ان کا والد نذیر احمد وفات پاگیا تھا اوراس کا دکھ ابھی کم نہیں ہوا تھا کہ آج ان کا جوان بھائی بھی ان سے جدا ہوگیا ہے ۔

مزید : علاقائی