لوڈشیڈنگ نے معمولات زندگی ٹھپ کر دئیے ، شارٹ فال 5500میگاواٹ تک پہنچ گیا

لوڈشیڈنگ نے معمولات زندگی ٹھپ کر دئیے ، شارٹ فال 5500میگاواٹ تک پہنچ گیا

  

                                                          لاہور(کامرس رپورٹر) وزارت بجلی و پانی کے تمام بڑے بڑے دعووں کے باوجود ملک میں گزشتہ روز بھی بد ترین لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری رہا جس سے معمولات زندگی تقریبا ٹھپ رہے ۔ گرمی کی شدت میں اضافہ سے بجلی کی ڈیمانڈ بڑھنے کی وجہ سے شارٹ فال بڑھ کر ساڑھے پانچ ہزار میگا واٹ تک پہنچ گیا ہے جس کی وجہ سے گزشتہ روز شہروں میں چودہ سے پندرہ گھنٹوں اور دیہی علاقوں میں بائیس گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ کی گئی بجلی کا متبادل انتظام نہ ہونے والے سرکاری دفاتر میں حاضری نہ ہونے کے برابر رہی جس سے ان دفاتر میں آئے سائلوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا ۔ مرمت کے نام پر بھی اٹھ سے دس گھنٹوں تک کے لئے تمام سب ڈویژنوں میں ایک ایک فیڈرز بند رکھا گیا ۔ اکثر علاقوں میں پانی کی بھی قلت رہی لوگ ایک دوسرے گھروں سے پانی مانگتے رہے۔ لوگوں نے رات چھتوں ، گلیوں اور پارکوں میں گزاری ۔ نیند پوری نہ ہونے کے باعث لوگوں میں چڑچڑاپن بڑھ گیا جس سے لڑائیوں کا رجحان بھی بڑھ گیا ۔ لوگ معمولی معمولی بات پر مشتعل ہونے لگے ۔ انرجی مینجمنٹ سیل کے ذرائع کے مطابق گزشتہ روز بجلی کی مجموعی ڈیمانڈ 17960 میگا واٹ جبکہ پیداوار 11050 میگا وا ٹ رہی طلب و رسد میں 6910 میگا واٹ کا فرق رہا ۔

لوڈ شیڈنگ

مزید :

صفحہ آخر -