امریکی فوجی کے بدلے رہاہونیوالے طالبان قیدی ذہنی مریض بن گئے

امریکی فوجی کے بدلے رہاہونیوالے طالبان قیدی ذہنی مریض بن گئے
امریکی فوجی کے بدلے رہاہونیوالے طالبان قیدی ذہنی مریض بن گئے

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) مریکی فوجی کی رہائی کے بدلے میں گوانتانامو بے سے رہا کیے گئے پانچ سینئر طالبان کمانڈرز کو دوحہ میں رکھا گیا ہے اور فیصلہ یہ کیا گیا ہے کہ ان کو میڈیا سے دور رکھا جائے جبکہ وہ قیدتنہائی میں رہنے کے بعد ذہنی مریض بن گئے اور لوگوں کو پہچاننے میں بھی مشکلات کاشکار ہیں۔ یہ پانچ کمانڈر ابھی تک اپنی رہائش گاہوں میں منتقل نہیں ہوئے اور اب بھی ایک محفوظ مقام پر ہیں۔ قطر کے حکام کے لیے میڈیا سے بات کرنے کی اجازت سے زیادہ اہم ان کی دیکھ بھال اور ان کے اہلِ خانہ کو قطر لانا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ 12 سال قید اور اس کا بیشتر حصہ قید تنہائی میں گزارنے کے بعد وہ ذہنی طور پر کسی سے بات کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔ رہا ہونے والوں میں سے ایک طالبان انٹیلی جنس کے نائب سربراہ عبدالحق واثق ہیں جنہوں نے ذرائع کو بتایا کہ ان کو لوگوں کو پہچاننے میں دقت ہو رہی ہے۔ رہا ہونے والے رہنماﺅں کا خدشہ ہے کہ ان کو گوانتانامو واپس نہ بھیج دیا جائے۔

مزید : بین الاقوامی