ایئرپورٹ حملہ ، ٹوئیٹر خبروں کیلئے ترجیح بنا رہا

ایئرپورٹ حملہ ، ٹوئیٹر خبروں کیلئے ترجیح بنا رہا
ایئرپورٹ حملہ ، ٹوئیٹر خبروں کیلئے ترجیح بنا رہا

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)خبروں اور اطلاعات کے ایک مقام سے دوسرے مقام یا شخص تک پہنچانے کے لیے مختلف ذرائع کااستعمال کیاجاتاہے ، کبھی کبوتر پالے جاتے تھے تو پھر خط کا رواج تھا،موبائل آنے کے بعد خط لکھنے کی روایت بھی دم توڑ گئی ۔ سائنس وٹیکنالوجی کی ترقی کے ساتھ ساتھ پرانے طریقے ختم اور نئے اپنائے جاتے رہے ۔ حالیہ دنوں میں کراچی کے جناح انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر ہونیوالے حملے کے بعد خبروں کے لیے ٹوئیٹر بھی مانیٹر کیاجاتارہااور درست خبروں کیلئے ترجیح رہا۔ذرائع کے مطابق کراچی ایئرپورٹ پر حملے کے بعد سے ٹوئیٹرپر 60ہزار سے زائد ٹوئیٹ کیے جاچکے ہیں ۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -