رواں سال کی پہلی کارروائی،قبائلی علاقے میں یکے بعد دیگرے دو ڈرون حملوں میں 16 افرادمارے گئے

رواں سال کی پہلی کارروائی،قبائلی علاقے میں یکے بعد دیگرے دو ڈرون حملوں میں ...
رواں سال کی پہلی کارروائی،قبائلی علاقے میں یکے بعد دیگرے دو ڈرون حملوں میں 16 افرادمارے گئے

  

میرانشاہ (مانیٹرنگ ڈیسک) شمالی وزیرستان کے دو مختلف مقامات پرا مریکی جاسوس طیاروں کے میزائل حملوں میں مجموعی طورپر افغانستان سے تعلق رکھنےو الے اہم کمانڈر سمیت 16افراد مارے گئے جبکہ حملے کے بعد بھی رات گئے تک ڈرون طیاروں کی پروازیں جاری رہیں۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق پہلا حملہ میرانشاہ میں ہوا جہاں امریکی جاسوس طیارےنے  درگاہ منڈی کے علاقے میں ایک مکان پر دو میزائل فائر کئے جس کے نتیجے میں اب تک اطلاعات کے مطابق چار ازبک شرپسندوں سمیت 6افراد مارے گئے ۔عسکری ذرائع کے مطابق مارے جانیوالوں میں دو پنجابی طالبان کمانڈر شامل ہیں ۔ دوسرا حملہ ڈانڈے درپہ خیل میں کیا گیا جس کے نتیجے میں 10 افراد مارے گئے ۔

                                      دوسرا حملہ رات گئے  میرانشاہ کے ہی علاقے دانڈے درپہ خیل میں  ہوا جہاں پانچ  ڈرون طیاروں نے 4 مکانوں اور ایک وین پر 8 میزائل فائر کئے۔ اس حملے میں 10 افراد ہلاک ہوئے۔ حملے کے بعد بھی ڈرون طیاروں کی پروازیں جاری رہیں جس سے مکینوں کو امدادی کارروائیوں میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ اہل علاقہ میں خوف و ہراس پھیل گیا۔

سرکاری ذرائع کے مطابق مرنیوالوں کی شناخت  کمانڈر یاسین گردیزی ،کمانڈر عبداللہ خان ، کمانڈرجمیل ، کمانڈراسداللہ اسد، کمانڈرحاجی گل ، کمانڈرمفتی سفیان اور کمانڈر ابوبکر وغیرہ کے نام سے ہوئی ہے جبکہ ایک ڈرائیور نورخان بھی مرنے والوں میں شامل ہے۔

 یاد رہے کہ رواں سال یعنی 2014ء میں ہونیوالے یہ پہلے ڈرون حملے تھے۔25دسمبر 2013ء کو کئے جانے والے ڈرون حملے کے بعد پاکستان میں ڈرون حملوں کا سلسلہ گذشتہ ساڑھے پانچ ماہ سےرو ک دیا گیا تھا۔

مزید : قومی /اہم خبریں