بش کا ہیکر جیل پہنچ گیا

بش کا ہیکر جیل پہنچ گیا
بش کا ہیکر جیل پہنچ گیا

  

بخارسٹ (نیوزڈیسک ) ایک رومانوی عدالت نے رومانیہ کے معروف ہیکر ”گوسیفر“ کو سابق امریکی صدر جارج بش کے خاندان اور رومانیہ کے خفیہ ادارے سمیت دیگراہم شخصیات کی ای میلز تک غیرقانونی رسائی حاصل کرنے پر 4 سال قید سنا کر جیل بھجوا دیا۔ ”گوسیفر“ جس کا حقیقی نام مارسل لیزر لیحل ہے، بنیادی طور پر ایک ٹیکسی ڈرائیور ہے لیکن دنیا بھر میں وہ آج ایک ہیکر کی حیثیت سے پہچانا جاتا ہے۔ گوسیفر کو جنوری میں رومانیہ کے دارالحکومت بخارسٹ سے گرفتار کیا گیا تھا۔ گوسیفر کو سب سے زیادہ شہرت اس وقت ملی جب 2013ءمیں اس نے بش کی نجی ای میلز کو ہیک کر لیا۔ ملزم نے سابق امریکی سیکرٹری کولن پاﺅل کو یورپی پارلیمانی ممبر کورینا کریچو کی طرف سے پیار محبت کی ای میلز بھی بھجوائیں، جس پر پاﺅل کو وضاحتیں دینا پڑیں۔ گوسیفر نے رومانیہ کی خفیہ ایجنسی کے چیف جارج میﺅر کا یاہو اکاﺅنٹ بھی ہیک کیا۔ اس ضمن میں رومانیہ جنرل پراسیکیوٹر دفتر کے ایک افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بین الاقوامی نیوز ایجنسی رائٹرز کو بتایا کہ تاحال امریکہ کی طرف سے ملزم کی حوالگی کا کوئی مطالبہ نہیں کیا گیا اور نہ امریکہ کی کسی عدالت میں گوسیفر کے خلاف کوئی شکایت کی گئی ہے۔ واضح رہے کہ گوسیفر نے نیویارک میگزین کے سابق ایڈیٹر سمیت دیگر معروف شخصیات کی ای میلز ہیک کرنے کا دعوی بھی کیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی