موسم بدلنے والے ڈرون بھی آگئے

موسم بدلنے والے ڈرون بھی آگئے
موسم بدلنے والے ڈرون بھی آگئے

  

لاس ویگاس (نیوزڈیسک ) نیواڈا میں امریکی سائنس دانوں نے موسمیاتی تبدیلیوں کے لئے ڈرونز کا استعمال شروع کر دیا۔ نیواڈا کو دسمبر 2013ءمیں امریکی ادارے فیڈرل ایوی ایشن ایڈمنسٹریشن (ایف اے اے) کی طرف سے منتخب کردہ ان 6 مقامات میں شامل کیا گیا ہے، جہاں معاشی فوائد کے حصول کے لئے مصنوعی طریقہ سے بارشیں برسانے کے تجربات کئے جانے ہیں۔ موسمیاتی تبدیلیوں کے اس پروگرام کا مقصد معاشی فوائد کے لئے بارشوں کی شدت میں مرضی سے تبدیلی لانا ہے۔ نئے پروگرام کے تحت ڈرونز کے ذریعے بادلوں میں ایک خاص قسم کا کیمیکل شامل کیا جا رہا ہے، جو بارشیں برسانے کا باعث بنے گا۔ اس ضمن میں معروف ماہر موسمیات جیسی فیرل کا کہنا ہے کہ ”اس پروگرام میں مشکل یہ ہے کہ اگر مصنوعی بارش برسانے کے لئے کیمیکل نے مطلوبہ کام نہ کیا تو پھر کیا ہوگا؟“۔ دوسری طرف نیواڈا میں موسمیاتی تبدیلیوں کے پروگرام کے ڈائریکٹر جیف ٹیلے کا کہنا ہے کہ ”ڈرونز کے ذریعے مصنوعی بارش برسانے کا عمل روایتی طریقوں سے سستا پڑے گا، کیوں کہ اس کو چلانے کے لئے زیادہ ایندھن اور پائلٹ کی ضرورت نہیں ہوگی۔ دوسرا ڈرونز کے ذریعے مصنوعی بارش برسانے کا عمل زیادہ محفوظ ہے“۔ واضح رہے کہ چین متواتر اس نئی ٹیکنالوجی کا استعمال کر رہا ہے اور اب نیواڈا حکومت بھی امید کر رہی ہے کہ یہ نئی ٹیکنالوجی کامیابی سے ہمکنار ہو گی۔

مزید : سائنس اور ٹیکنالوجی