امریکی جنگی ہتھیار شہروں میں پہنچ گئے

امریکی جنگی ہتھیار شہروں میں پہنچ گئے
امریکی جنگی ہتھیار شہروں میں پہنچ گئے

  

واشنگٹن (نیوز ڈیسک) افغانستان سے امریکی فوجوں کی واپسی شروع ہو چکی ہے اور اس ملک کو برباد کرنے کیلئے لائے گئے ٹینکوں، میزائلوں، مشین گنوں اور دیگر گولہ بارود نے اب امریکی شہروں کا ہی رخ کر لیا ہے۔ افغانستان سے ہتھیاروں کی بڑی تعداد میں واپسی کے نتیجہ میں ان میں سے بہت سارے ہتھیار، فوجی گاڑیاں اور جنگی سازو سامان امریکی پولیس کے حوالے کر دیئے گئے ہیں اور چھوٹے چھوٹے شہروں میں جہازی سائز کی خوفناک بکتر بند ٹرک گھومتے نظر آتے ہیں۔ سیکیورٹی کے ماہرین اور سابقہ پولیس افسران نے اس رجحان کو انتہائی خطرناک قرار دیا ہے۔ امریکن سول لبرٹیز یونین کی سینئر مشیر کارا ڈینسکی بھی ان جنگی ہتھیاروں کی پولیس کے پاس موجودگی کو خطرناک سمجھتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ پولیس کے پاس یہ خطرناک ہتھیار آنے کے بعد وہ ان کو بے تکلفی سے استعمال کرتے ہیں اور جہاں بہت کم اور ہلکے ہتھیاروں کی ضرورت ہوتی ہے وہاں بھی جنگی معیار کے ہتھیاروں کے استعمال سے شدید متشدد فضاءپیدا ہو جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے ماہ سواٹ ٹیم (سپیشل کمانڈو یونٹ) نے ایک نشہ فروش کو پکڑنے کیلئے اس کے گھرپر چھاپہ مارا اور گرنیڈ سے حملہ کیا۔ یہ گرنیڈ ایک معصوم بچے کے بستر کے قریب گرا جس سے وہ شدید زخمی ہو گیا۔ ایک اندازے کے مطابق پولیس کو اب تک لاکھوں مشین گنیں، دو لاکھ گولیوں کے میگزین اور سینکڑوں بکتر بند کاریں اور ہوائی جہاز مل چکے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی