پاکستانی مردوں کے جسم میں جاسوسی جپ کی تنصیب، فیصلہ کیسے ہوگا، تفصیلات سامنے آگئیں

پاکستانی مردوں کے جسم میں جاسوسی جپ کی تنصیب، فیصلہ کیسے ہوگا، تفصیلات سامنے ...
پاکستانی مردوں کے جسم میں جاسوسی جپ کی تنصیب، فیصلہ کیسے ہوگا، تفصیلات سامنے آگئیں

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پنجاب کی کابینہ نے ویمن پروٹیکشن بل منظور کرلیاجسے اب ایوان میں پیش کیاجائے گا، بل کے متن کے مطابق جنسی طورپر ہراساں کیے جانے والی خاتون کی درخواست پر متعلقہ مرد کے جسم میں ٹریکنگ ڈیوائس نصب کرکے خواتین کے کام کی جگہ پر جانے پر پابندی لگادی جائے گی ۔

تفصیلات کے مطابق بل کے متن میں کہاگیاہے کہ بل کے متن کے مطابق ہر ضلع میں خواتین کے تحفظ کے لیے ویمن پروٹیکشن آفیسر تعینات کیاجائے گا، جسے خواتین کے تحفظ ، رہائش ، دیکھ بھال یا مانیٹرنگ کے احکامات دینے کا اختیار ہوگا۔

بل میں خواتین کے مالی استحصال پر بھی روشنی ڈالی گئی اور مردوں کی طرف سے تنخواہ چھپانا بھی ایک جرم جبکہ خاتون کواپنے مرد کی تنخواہ میں سے مناسب حصہ وصول کرنے کی حقدار قراردیاگیا۔ یہ بل پنجاب کابینہ کے اجلاس میں پیش کیاگیاجس نے نظرثانی کیلئے سٹینڈنگ کمیٹی برائے سوشل ویلفیئر کے سپرد کیا جسے بعد ازاں منظور کرلیاگیا، یہ بل جلد ہی پنجاب اسمبلی میں پیش کیے جانے کاامکان ہے ۔

ایوان میں اس بل کی مخالفت کا امکان ظاہر کیاجارہاہے کیونکہ انسانی حقوق سے متعلق کام کرنیوالی تنظیموں کاکہناہے کہ خواتین کی سیکیورٹی یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ مردوں کے بنیادی انسانی حقوق کا بھی خیال رکھناچاہیے ، جسم میں لگنے والی ٹریکنگ ڈیوائس سے مرد کی زندگی مفلوج ہوکر رہ جائے گی اور ہروقت وہ زیرنگرانی ہوگا،اس کے علاوہ گھریلو جھگڑوں کی وجہ سے بھی کئی شوہر ٹریکنگ ڈیوائس لگوائے پھریں گے ۔

مزید : انسانی حقوق /اہم خبریں