امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھیں، اپنے مفادات کا تحفظ کریں گے، اقتصادی راہداری گیم چینجر ہے: وزیراعظم

امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھیں، اپنے مفادات کا تحفظ کریں گے، اقتصادی ...
امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھیں، اپنے مفادات کا تحفظ کریں گے، اقتصادی راہداری گیم چینجر ہے: وزیراعظم

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم نواز شریف نے بھارتی بیانات کو غیر ذمہ دارانہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کی امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے، تمام ہمسایوں کے ساتھ پرامن تعلقات چاہتے ہیں لیکن دوسری طرف بھی ایسا رویہ ہونا چاہئے۔ پاکستان تحمل سے چیلنجز کا سامنا کرتے ہوئے آگے بڑھ رہا ہے، اقتصادی راہداری منصوبہ خطے میں گیم چینجر ثابت ہو گا۔

وزیر اعظم نے یہ بھی کہا کہ گوادر کو ڈیوٹی فری پورٹ ڈیکلئیر کیا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق سفیروں کی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ دنیا کا یہ خطہ وسائل سے مالامال ہے اور پاکستان تحمل کے ساتھ چیلنجز کا سامنا کرتے ہوئے آگے بڑھ رہا ہے۔ ملک میں جمہوریت مستحکم اور ادارے مضبوط ہو رہے ہیں جس کے باعث پاکستان خطے میں معاشی طاقت بن کر ابھر رہا ہے تاہم ابھی بہت کام کرنا باقی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی معاشی صورتحال بہتر ہو رہی ہے اور افراط زر میں کمی، زرمبادلہ کے ذخائر کا بڑھنا اقتصادی بہتری کی علامت ہیں۔ پاکستان کی منفرد جغرافیائی حیثیت ہے اور حکومت کیلئے قومی مفاد سب سے مقدم ہے اور اسی کو مدنظر رکھتے ہوئے اقتصادی راہداری منصوبے پر تمام سیاسی جماعتوں کو اعتماد میں لیا ہے جبکہ یہ منصوبہ خطے میں گیم چینجر ثابت ہو گا جس کے ذریعے ناصرف خنجراب سے گوادر تک کے علاقے مستفید ہوں گے بلکہ خطے کے دیگر ممالک بھی اس سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔

وزیراعظم نواز شریف نے بھارتی بیانات کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان تمام ہمسایہ ممالک کے ساتھ پرامن تعلقات چاہتا ہے لیکن اس کے لئے ضروری ہے کہ دوسری جانب بھی اسی طرح کا رویہ ہو کیونکہ امن کی خواہش یکطرفہ نہیں ہو سکتی۔ بھارتی قیادت کے غیر ذمہ دارانہ بیانات سے مفاہمت کی فضاءمتاثر ہوئی ہے اور امن کی کوششوں کو شدید دھچکا پہنچا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سفارتکاری اہداف کے حصول کا بہترین ذریعہ ہے، وزارت خارجہ تمام متعلقہ وزارتوں سے روابط بڑھائے۔

وزیراعظم نے کہا کہ آپریشن ضرب عضب میں شاندار کامیابیاں حاصل ہوئی ہیں اور اس کے ذریعے دہشت گردوں کا نیٹ ورک اور کنٹرول سسٹم تباہ کیا گیا ہے اور اب دہشت گردوں کو اپنی سرزمین پر ٹھکانے نہیں بنانے دیں گے ۔ افغانستان سے بھی کہا ہے کہ وہ اپنی سرزمین کو پاکستان کے خلاف استعمال نہ ہونے دے کیونکہ پاک افغان سرحد پر امن دونوں ممالک کی ذمہ داری ہے۔ وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان کی امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے، اپنے مفادات کا ہر قیمت پر تحفظ کریں گے۔ ہمسایہ ممالک سے برابری کی سطح پر تعلقات چاہتے ہیں کیونکہ امن کی خواہش یکطرفہ نہیں ہو سکتی۔

قبل ازیں وزیراعظم نے قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گوادر پورٹ پورے خطے کے لئے ایک تحفہ ثابت ہوگا.انہوں نے تمام پارٹیوں سے اپیل کی کہ وہ حکومت کے ساتھ مل بیٹھیں اور گوادر کو فری پورٹ بنانے میں اپنا کردار بھی ادا کریں۔

مزید : قومی /اہم خبریں