’10 بھینسیں ہمیں جرمانہ کے طور پر دو یا جیل جانے کیلئے تیار ہو جاؤ‘

’10 بھینسیں ہمیں جرمانہ کے طور پر دو یا جیل جانے کیلئے تیار ہو جاؤ‘
’10 بھینسیں ہمیں جرمانہ کے طور پر دو یا جیل جانے کیلئے تیار ہو جاؤ‘

  

کوالا لمپور (نیوز ڈیسک) ملائشیا کے جزیرے بورنیو کے ایک مقامی سردار کا کہنا ہے کہ ان کے مقدس پہاڑ پر برہنگی کا مظاہرہ کر کے زلزلے کا سبب بننے والے غیر ملکی سیاح 10 بھینسیں بطور جرمانہ ادا کر کے آزادی حاصل کر سکتے ہیں۔

مزیدپڑھیں:کنوارہ پن عذاب بن گیا ،جاپانی مرد صنف مخالف کر ترسنے لگے

حال ہی میں آنے والے زلزلے کے بعد بورنیو جزیرے پر واقع کنا بالو پہاڑ کو مقدس جاننے والے قبائلیوں اور کچھ حکومتی اہلکاروں نے پہاڑ پر برہنہ ہو کر تصاویر بنانے والے سیاحوں کو اس آفت کا زمہ دار قرار دیا تھا۔ قبائلیوں کا کہنا تھا کہ مقدس پہاڑ پر ان کے آباﺅ اجداد کی روحیں مقیم ہیں اور غیر ملکیوں کی بیہودہ حرکات سے روحیں بھڑک اٹھی تھیں جس کے نتیجہ میں زلزلہ آ گیا۔ ملائشین حکام نے برہنگی کا مظاہرہ کرنے والے چار غیر ملکی سیاحوں کو گرفتار کر رکھا ہے جن میں برطانوی دوشیزہ ایلینر ہاکنز بھی شامل ہیں۔ چوبیس سالہ ایلینر کا تعلق انگلینڈ کے علاقے ڈربی سے ہے اور انہیں سباح ائر پورٹ سے کوالا لمپور کے لئے روانہ ہونے کی کوشش کے دوران گرفتار کیا گیا تھا۔

گزشتہ رات یہ خبر سامنے آئی کہ ایک مقامی سردار نے پیشکش کی ہے کہ گرفتار سیاح 10 عدد بھینسیں بطور ہرجانہ، جسے مقامی زبان میں سوگٹ کہا جاتا ہے، دے کر رہائی حاصل کر سکتے ہیں، یا دوسری صورت میں انہیں تین ماہ جیل میں گزارنا پڑیں گے۔ پروہت ٹنڈاراما سروم سمبونا نے اس بارے میں بات کرتے ہوئے کہا، ”پہاڑ کی رکھوالی کرنے والے دیوتاﺅں کو ناراض کرنے والے سیاحوں کہ جرمانہ ادا کرنا ہو گا تا کہ ان کی غلطی کا ازالہ ہو سکے۔ وہ 10 نر یا مادہ بھینسیں دے سکتے ہیں۔“ دیگر تین غیر ملکی سیاحوں کے ساتھ گرفتار ہونے والی ایلینر ایرو سپیس انجینئرنگ کی طالبہ ہیں اور ان کے والد ڈربی میں ایک انجینئرنگ کمپنی چلاتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس