اتنی سی کہانی

اتنی سی کہانی
اتنی سی کہانی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

فرصت

سحری کے وقت جو جی نے فیس بک پر اسٹیٹس اپ ڈیٹ کیا۔

دوپہر میں اس نے بدلتی سیاسی صورتحال پر ایک بھڑکیلا سا ٹویٹ کیا۔

دیر تک کمینٹس پر بحث کرتا رہا۔

شام کو ٹیکنالوجی پر لکھا ایک آرٹیکل واٹس ایپ پر بھیجا۔

میرا ماتھا ٹھنکا۔

سوچا اسے ویسے تو کسی چیز کی فرصت نہیں ہوتی۔

یہ اچانک سوشل میڈیا پر اتنا مصروف کیوں ہو گیا۔

جاننے کے لئے میں نے فون کیا۔

’’وہ در اصل‘‘۔۔۔

اس نے جھجکتے ہوئے بتایا۔

’’میں اعتکاف میں جو بیٹھ گیا ہوں۔‘‘

مزید : رائے /کالم