بھارت دنیا کا سب سے بڑا آبی دہشت گرد ہے‘فلورملز ایسوسی ایشن

بھارت دنیا کا سب سے بڑا آبی دہشت گرد ہے‘فلورملز ایسوسی ایشن

لاہور(کامرس ڈیسک) پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے رہنما عاصم رضا ، چےئرمین پنجاب لیاقت علی خان ، سابق چےئرمین چوہدری افتخار احمد مٹو اور میاں ریاض نے کہا ہے کہ بھارت دنیا کا سب سے بڑا آبی دہشت گرد ہے جو پاکستان کو بنجر بنانے اور قحط سالی سے دوچار کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ پوری قوم بھارت کے مزمون اداروں ارادوں سے باز رکھنے کیلئے اٹھ کھڑی ہو۔ کالا باغ ڈیم کی مخالفت کرنے والوں کو قومی مجرم قرار دیگر کر فوری طور پر گرفتار کر لیا جائے ۔ پاک آرمی آنے والی نسلوں اور پاکستان کی بقاء کی خاطر کالا باغ ڈیم کی تعمیر مکمل کروائیں پوری قوم ساتھ دے گی۔یہ بات انہوں نے گزشتہ روز اپنے دفتر میں ہنگامی اجلاس کے دوران خطاب کرتے ہوئے کہی۔ عاصم رضا نے کہاکہ بھارت آبی دہشت گردی کرتے ہوئے پاکستانی دریاؤں کا پانی روکنے کیلئے دریاؤں پر چھوٹے بڑے ڈیم بنا کر پانی روک رہا ہے ، بھارت پچھلے تین سالوں سے افغانستان کے ساتھ ملکردریائے کابل پر ڈیم بنا رہا ہے جس کا بنیادی مقصد دریائے سندھ کے پانی کو روکنا ہے جبکہ ہمارے حکمران اور اپوزیشن جماعتیں حصول اقتدار کے جنگ لڑنے میں لگے ہوئے ہیں،انہوں نے کہاکہ کالاباغ ڈیم کو ملکی اور بین الاقوامی آبی ماہرین اور انجینئرز سٹیٹ آف دی آرٹ کا درجہ دے چکے ہیں۔

،آنے والی نسلوں کا مستقبل کالا باغ ڈیم سے مشروط ہے ،اس کے باوجود بھارت کی گود میں بیٹھ کر کالا باغ ڈیم کی مخالفت کرنے والے والوں کو جیل کی کوٹھریوں میں نہیں ڈالا جا سکا۔

انہوں نے کہاکہ کالا باغ ڈیم کے مقام سے اٹک تقریبا 95میل دور ہے جبکہ کالا باغ ڈیم کی جھیل تقریباً 50 میل پیچھے تک جائے گی۔

جبکہ اٹک 95میل دور ہے جبکہ نوشہرہ اس سے بھی کافی پیچھے ہے، بھارت آبی دہشت گردی کرتے ہوئے نہ صرف پانی روک کر پاکستان کو نقصان پہنچائے گا بلکہ بارشوں کی صورت میں سیلابی پانی چھوڑ کر پاکستان کو جانی و مالی نقصان سے دوچار کریگا۔انہوں نے کہا کہ تربیلا ڈیم اور منگلا ڈیم سے بننے والی بجلی سے صرف پنجاب ہی نہیں بلکہ پورا پاکستان استفادہ حاصل کر رہا ہے ،لیکن دونوں بڑے ڈیموں کی تعمیر سے کیا پاکستان کے شہر ڈوب گئے یا خوشحال ہوئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ موجودہ حالات میں کالا باغ ڈیم ہی پاکستان کی خوشحالی کا ضامن ہے ،انہوں نے کہا کہ سابقہ حکومتوں نے پرائیویٹ بجلی گھروں کے ذریعے بجلی پیدا کر کے عوام کو خون نچوڑا ہے ،دنیا کی مہنگی ترین بجلی کے حصول کیلئے سالانہ اربوں روپے کا پیٹرول درآمد کیا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ اگر کالا باغ ڈیم بن جاتا تو ہر سال 5 ارب ڈالر کا تیل امپورٹ کرنے سے بچ سکتے تھے، پاکستان اسٹیٹ آئل(PSO) کا شفاف آڈٹ کیا جائے تو اربوں ڈالر کے بے ضابطگیاں سامنے آجائیں گی۔اربوں ڈالر کی بندر بانٹ کی صورت میں 2 روپے فی یونٹ بجلی پیدا کرنے والے کالا باغ ڈیم کی حمایت کون کرے گا۔ انہوں نے کہاکہ نریندر مودی پاکستان میں داخل ہونے والے تمام دریاؤں پر سینکڑوں چھوٹے بڑے ڈیم بنا کر پانی کا بہاؤ تقریبا روک چکا ہے ۔اب اس نے 19 مئی کو کشن گنگا ڈیم کا بھی افتتاح کر دیا ہے جس کے بعد نیلم جہلم میں بھی پانی روک دیا گیا ہے جبکہ پاکستانی قوم سے آج بھی نیلم جہلم ڈیم کے نام پر بجلی کے بلوں میں پچھلے 18 سال سے اربوں روپے کے ٹیکس وصول کئے جا رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ کالا باغ ڈیم انتہائی شارٹ مدت یعنی 5 سال میں مکمل ہو کر بجلی کی پروڈکشن دینے لگے گا ،قوم نے اس ڈیم کی بنیادی رپورٹس کی تیاری پر 30 برسوں کے دوران اربوں روپے خرچ کر دےئے ہیں۔اب بغیر وقت ضائع کئے اگر کالا باغ ڈیم کی تعمیر مکمل نہ کی گئی تو پوری قوم کواس کا کفارہ بھوک ،پیاس، گرمی اور معیشت کی تباہی کی صورت میں ادا کرنا پڑے گا۔لہذا آرمی چیف اور چیف جسٹس سپریم کورٹ آف پاکستان سے پوری قوم کا مطالبہ ہے کہ وہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر مکمل کروانے میں اپنا کردار ادا کریں۔

مزید : علاقائی