سی پیک کے تحت چاروں صوبوں سمیت فاٹا ، آزاد کشمیر میں 9صنعتی زون بنیں گے

سی پیک کے تحت چاروں صوبوں سمیت فاٹا ، آزاد کشمیر میں 9صنعتی زون بنیں گے

 اسلام آباد (این این آئی) چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے سے صنعتی انقلاب برپا ہوگا‘ اس مرحلہ میں ملک کے چاروں صوبوں ‘ گلگت بلتستان ‘ فاٹا اور آزاد کشمیر میں 9 صنعتی زونز بنائیں جائیں گے۔ سی پیک سیکرٹریٹ حکام کے مطابق خیبر پختونخوا میں رشکئی اکنامک زون اور سندھ میں چائنہ اکنامک زون داریجی، بلوچستان میں بوستان اکنامک زون اورپنجاب میں چائنہ اکنامک زون شیخوپورہ، گلگت بلتستان میں مقپونداس گلگت جبکہ کشمیر میں بھمبر صنعتی زون پر تیزی سے کام ہو رہا ہے۔ دارلحکومت اسلام آباد میں آئی سی ٹی ماڈل انڈسٹریل زون اورپورٹ قاسم میں پاکستان سٹیل میل کی اراضی پرانڈسٹریل پارک بنانے جبکہ فاٹا کی جانب سے مومند ماربل انڈسٹریل زون بنانیں جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ چین کے سرمایہ کار سٹیل، سیمنٹ، توانائی، ٹیکسٹائل اور آٹو سیکٹر کے شعبے میں دلچسپی لے رہے ہیں۔ گوادر فری زون و پورٹ ڈیویلپمنٹ کے مختلف منصوبوں اور گوادر ووکیشنل انسٹی ٹیوٹ کے تعمیراتی کام کو مزید تیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔علاوہ ازیں سی پیک سیکرٹریٹ حکام نے کہا ہے کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے سے ملک میں ترقی و خوشحالی کے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا ، پاک چین اقتصادی راہداری میں گلگت بلتستان کو گیٹ وے ہونے کا اعزاز حاصل ہے،سماجی وانسانی ترقی کے منصوبوں ، پانی ،توانائی اور خوراک کے شعبوں میں سرمایہ کاری سے عوام کی زندگی میں بہتری آئے گی۔ گلگت بلتستان میں پانی کے وسیع ذخائر موجود ہیں یہی وجہ ہے کہ اس علاقے میں دیامر بھاشا اور داسو ڈیمز سمیت متعدد آبی ذخائر تعمیر کیئے جارہے ہیں۔ قدیم شاہراہِ ریشم اور موجودہ قراقرم ہائے وے پاک چین دوستی کی علامت ہے، یہ شاہراہ اب چین پاکستان اقتصادی راہداری کا حصہ بن چکی ہے۔ سی پیک کے تحت گلگت بلتستان میں شاہراہوں، بجلی گھروں ،اقتصادی زونز اور دوسرے منصوبوں پر کام تیز ی سے جاری ہے۔

سی پیک

مزید : علاقائی