بہاولنگر ، ٹکٹوں کی تقسیم پرتحریک انصاف کے کا رکنوں میں غم و غصہ کی لہر

بہاولنگر ، ٹکٹوں کی تقسیم پرتحریک انصاف کے کا رکنوں میں غم و غصہ کی لہر

بہاولنگر(ڈسٹرکٹ رپورٹر)ملک بھر کی طرح بہاولنگر میں بھی تحریک انصاف میں ٹکٹوں کی تقسیم پر مقامی تنظیم میں بھی شدید اضطراب پایاجاتاہے ۔دیرینہ نظریاتی کارکنوں میں نئے آنے والوں کو ٹکٹیں دینے پر شدید غم و غصہ پایا جاتاہے ۔اگریہی صورتحال برقرار رہی تو تحریک انصاف ضلع بھر میں کوئی سیٹ حاصل نہیں کرپائے گی ۔نظریاتی کارکن میڈیا سروے میں پھٹ پڑے ۔اس موقع پر شہری کارکنوں کا کہنا ہے کہ پی پی 239 میں نئے آنے والے سابق پیپلزپارٹی کے ایم پی اے راؤاعجاز علی خان کواگرپی ٹی آئی کا ٹکٹ دیاجاتاہے تو نظریاتی کارکن شدید احتجاج پر مجبور ہوں گے کیونکہ دو ماہ قبل پارٹی میں صرف اقتدار کے حصول کے لیے شامل ہونے والوں کو نظریاتی کارکن مسترد کرتے ہیں او ر حلقہ کے موثراور مضبوط ترین تحریک انصاف کے دیرینہ ساتھی راؤ مدثرعلی خان جنہوں نے گذشتہ دنوں حلقہ کی براردی کا نجی شادی ہال میں افطار ڈنر پر بہت بڑا اجتماع کیا تھا جس میں برادری کے سرکردہ اہم سیاسی شخصیات بالخصوص جن میں چیئر مین بلدیہ ڈونگہ بونگہ راؤ سلیم اختر ٗپاکستان پیپلزپارٹی کے سابق ٹکٹ ہولڈرراؤ حشمت علی خان اور درجنوں کونسلرز چیئرمینوں نے راؤ مدثر علی خان پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے انہیں اپنی سپورٹ کی یقین دہانی بھی کروائی ہے اوراسی طرح شہر کی مقامی تنظیم تحریک انصاف اور اسکی ذیلی تنظمیں وکلاء ونک انصاف فورم اور یوتھ فورم کے علاوہ انجمن تاجران ٗانجمن آڑھتیان سول سوسائٹی کی مکمل حمایت حاصل ہے مختلف فورمز کے لوگوں کی بڑی تعداد جن میں وکلاء کے نمائندے چوہدری قمر منیر ٗعدنان کھچی ایڈووکیٹ ٗعابد سکھیرا ٗشخ شفقت اور احمد لالیکا نے پارٹی قیادت سے مطالبہ کیاہے کہ حلقہ پی پی 239سے راؤ مدثر علی خان کو ٹکٹ دیا جائے تو وہ باآسانی یہ سیٹ جیت سکتے ہیں ۔

غم و غصہ

مزید : صفحہ اول