پی ٹی آئی نظریاتی اور جے یو آئی نظریاتی اتحاد

پی ٹی آئی نظریاتی اور جے یو آئی نظریاتی اتحاد

ٹوپی( تحصیل رپورٹر) پاکستان تحریک انصاف نظریات اور جمعیت علمائے اسلام نظریات کا انتخابی اتحاد صوابی کے تمام حلقوں اپنے امیدوار کامیاب کریں گے موروثیت کے خلاف تحریک انصاف نے آواز بلند کی اور خود ہی صوابی میں دو خاندانوں کے درمیان حلقوں کے ٹکٹ دے اقباء پروری، موروثیت اور خاندانی خان ازم کو فروغ دیا ان خیالا ت کا اظہار مدرسہ دارلعلوم سعدیہ کوٹھا میں جمعیت عمائے اسلام نظریاتی کے مرکزی امیر سابق ایم این اے مولانا خلیل احمد مخلص کی زیر صدارت میں پاکستان تحریک انصاف نظریاتی اور دیگر نظریاتی پارٹیوں کیساتھ نظریاتی انتخابی اتحاد کے موقع پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کے فاؤنڈرز اور نظریاتی راہنماؤں آصف کریم خان ، یوسف علی خان اور طاہر تسلیم موجود تھے جب کہ جمعیت علمائے اسلام نظریاتی کے مرکزی امیر و سابق ایم این اے مولانا خلیل احمد مخلص صوبائی جنرل سیکریٹری نجیم خان ایڈوکیٹ اور شوریٰ کے ممبران کثیرتعداد میں موجود تھے مولانا خلیل احمد مخلص نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں اللہ اور اللہ کے قانون کیلئے جدوجہد کررہے ہیں ختم النبوت کے قوانین میں ترمیم جہاں تک سیکولر سیاسی جماعتیں مجرم ہیں ان سے کہیں بڑھ کر مذہبی جماعتیں زمہ دار ہیں صوبہ بھر میں نظریاتی لوگوں کو سامنے لارہے ہیں ہمارا بیانیہ ہی یہی ہوگا کہ ختم النبوت کے قوانین کو ختم کرنے والے اسلام کے دشمن ہیں پاکستان تحریک انصاف فاؤنڈر گروپ و نظریاتی راہنماؤں یوسف علی ، آصف کریم خان اور طاہر تسلیم نے نظریاتی اتحاد میں شامل ہونے اور دو خاندانوں کے درمیان پاکستان تحریک انصاف کے ٹکٹوں کو تقسیم کرکے کے خلاف ان کا راستہ روکیں گے اسد قیصر نے کرپشن کی نئی مثالیں قائم کئے ہیں وائٹ پیپر شائع کرکے عوام کو ان کی کرتوتوں سے آگاہ کریں گے کہ کس طرح پاکستان تحریک انصاف کے نظرئے کیساتھ کھیل کر بانی ورکروں کو سائیڈ لائن کیا اور خود کرپشن کرکے نظرئے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا اس موقع پر مشترکہ اعلامیہ میں مولانا خلیل احمد مخلص کو این اے18،اسد قیصر کے قریبی رشتہ دار آصف کریم خان کو پی کے 43 ،طاہر تسلیم اور یوسف علی خان میں سے ایک کو پی کے44،مولانا مسرور احمد پی کے 45، لطیف شاکر پی کے46اور پی کے47سے نثار علی خان کے ناموں کی باضابطہ منظوری دی گئی ایک سوال کے جواب میں مولانا خلیل احمد نے کہا گزشتہ انتخابات میں اسد قیصر کیساتھ ضمنی الیکشن میں اتحاد کیا تھا لیکن جب وہ لوگ اقتدار میں آئے تو ان کے عوام دشمن کارناموں اور کرپشن سے با خبر ہوئے اس وجہ سے ان لوگوں کیساتھ اتحاد اسلامی نظریہ اور اصولوں سے غداری ہوگی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر