”یہ اپنی نوعیت کاواحد مقدمہ ہے جو چل تو احتساب عدالت میں رہا ہے لیکن ڈوریں۔۔۔ “نواز شریف پھٹ پڑے ،واضح الفاظ میں وہ بات کہہ دی جو اب تک نہ کہی تھی

”یہ اپنی نوعیت کاواحد مقدمہ ہے جو چل تو احتساب عدالت میں رہا ہے لیکن ...
”یہ اپنی نوعیت کاواحد مقدمہ ہے جو چل تو احتساب عدالت میں رہا ہے لیکن ڈوریں۔۔۔ “نواز شریف پھٹ پڑے ،واضح الفاظ میں وہ بات کہہ دی جو اب تک نہ کہی تھی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ میرے سنیئر وکیل خواجہ حارث نے احتساب عدالت میں دستبرداری کی درخواست دائر کردی ،ایسی اطلاعات دوسرے وکیل کی جانب سے بھی آرہی ہیں ،ایسا ماحول بنا دیا گیا کہ میں وکیل سے بھی محروم ہو گیا ہوں ۔ان کا کہنا ہے کہ یہ اپنی نوعیت کا واحد مقدمہ ہے جو چل تو احتساب عدالت میں رہاہے لیکن ڈوریں سپریم کور ٹ کی جانب سے ہلائی جا رہی ہیں ۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں جس عدالت میں پیش ہو رہا ہوں اس میں 40مقدمات ہیں ،کیا چیف جسٹس کو ان کے بارے میں علم ہے ،ان میں سے ایک بھی مقدمہ ایسا نہیں جس کی مانیٹرنگ سپریم کورٹ کررہا ہو۔

انہوں نے کہا کہ میرے بنیادی حقوق بری طرح سلب کیے جا رہے ہیں ،آج تک کسی وکیل کو مجبور نہیں کیا گیا کہ وہ سارا دن اور چھٹی والے دن بھی پیش ہو ،چھٹیوں اور مقررہ اوقات کے بعد بھی سماعت جاری رکھنے کا کہا گیا ،چیف جسٹس نے ہمارے وکیل سے کہا کہ ایک ماہ کے اندر ریفرنسز کا فیصلہ آجانا چاہیے ۔ان کا کہنا تھا کہ نئے وکیل کے لیے عدالت سے وقت مانگا ،ایسا ممکن نہیں کہ کل وکالت نامہ جمع کرائیں اور پرسوں دلائل شروع کردیں ،وکیل کو کیس کی تیاری کا وقت بھی درکار ہوتا ہے ۔

مزید : اہم خبریں /قومی