”مجھے چیف جسٹس کے ان ریمارکس پر بہت دکھ اور صدمہ پہنچا کہ میں اپنی بیوی کی ۔۔۔“نوازشریف نے ایسی بات کہہ دی کہ چیف جسٹس بھی جذباتی ہو جائیں گے

”مجھے چیف جسٹس کے ان ریمارکس پر بہت دکھ اور صدمہ پہنچا کہ میں اپنی بیوی کی ...
”مجھے چیف جسٹس کے ان ریمارکس پر بہت دکھ اور صدمہ پہنچا کہ میں اپنی بیوی کی ۔۔۔“نوازشریف نے ایسی بات کہہ دی کہ چیف جسٹس بھی جذباتی ہو جائیں گے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )سابق وزیراعظم اور ن لیگ کے تاحیات قائد نوازشریف نے کہاہے کہ چیف جسٹس نے گزشتہ روز کہا کہ میں تشہیر کیلئے بیوی سے ملنے کی اور چھٹی کی بات کرتاہوں ، مجھے ان ریمارکس سے بہت ہی دکھ اور صدمہ پہنچا ۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نوازشریف کا کہناتھا کہ ہمارے وکلا نے ایک بھی پیش کیلئے نئی تاریخ کا تقاضا نہیں کیا ، میں نے تقریبا سو پیشیاں بھگت لی ہیں ، مجھے اہلیہ سے بھی ملنے کی اجازت نہیں دی جارہی لیکن میں نے اور میرے وکلاءنے ہر حال میں تعاون جاری رکھا ، گزشتہ روز چیف جسٹس نے کہا کہ میں تشہیر کیلئے بیوی سے ملنے کی اور چھٹی کی بات کرتاہوں ، مجھے ان ریمارکس سے بہت ہی دکھ اور صدمہ پہنچا ، میں نے ان کی عدالت میں ایسی کوئی رحم کی درخواست نہیں کی لیکھ پھر بھی مجھے نہیں معلوم کہ انہو ںنے اس طرح کے ریمارکس کیوں دیئے ، مجھے نہیں معلوم کہ کونسا آئین اور قانون انہیں اس طرح کی دل آزاری کی اجازت دیتاہے ، پاناما کے نام سے شروع ہونے والے کھیل کی آخری قسط انتہائی افسوسناک نظیر ہے ۔

ان کا کہناتھا کہ اب تک بہت سے راز کھل چکے ہیں اور بہت سے سوالوں کے جواب آنے ہیں ، قوم کومعلوم ہونا چاہیے کہ فضول قرار دی گئی پٹیشن کیسے متعبر ہو گئی ،جے آئی ٹی کیسے بنی اور واٹس ایپ کال کس نے کی اور کس نے کروائی ،پھر جے آئی ٹنے کہاں کہاں کیا گل کھلائے اور جب کرپشن کا ایک بھی پیسہ ثابت نہیں ہوا تو ایک اقامہ نکالا گیا اور ایک خیالی تنخواہ دریافت کی گئی اور بیٹے سے تنخواہ نہ لینے پر وزیراعظم ہاﺅس سے نکال دیا گیا ۔

مزید : قومی