چکی مالکان کی طرف سے آٹا مہنگاکرنا قابل مذمت ہے،جاوید قصوری

چکی مالکان کی طرف سے آٹا مہنگاکرنا قابل مذمت ہے،جاوید قصوری

  

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیرجماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب و صدر ملی یکجہتی کونسل پنجاب وسطی محمد جاوید قصوری نے کہاہے کہ چکی مالکان کی جانب سے آٹا 65روپے فی کلو کرنا قابل مذمت ہے۔ فلور ملزنے آٹے کا تھیلا 900روپے کا کردیا ہے۔ اس سے عام مارکیٹ میں آٹے کا تھیلا 1000روپے تک فروخت ہورہا ہے جس سے عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہے۔ گندم کے سیزن کے باوجود آٹے کی قیمت میں اضافہ حیران کن اور حکمرانوں کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔پٹرول عوام کو دستیاب نہیں جبکہ آٹا عوام کی پہنچ سے باہر ہوچکا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزچکی مالکان کی طرف سے آٹے کی قیمت میں ہوشربا اضافہ پر اپنے ردعمل میں کیا۔

انہوں نے میڈیا کو جاری کردہ اپنے بیان میں کہا کہ ملک میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں، پورا ملک ہی مافیا کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے، جو دونوں ہاتھوں سے عوام کو لوٹنے میں مصروف ہے۔ چینی مافیا کو عبرت کا نشانہ بنادیا گیا ہوتا تو آج آٹا مافیا، پولٹری مافیا، پٹرول مافیا، ڈرگ مافیا، کمیشن مافیا، اور دیگر محکموں میں موجود کرپٹ مافیا کو لگام ڈالی جاسکتی تھی۔ وزیر اعظم کے ارد گرد چینی مافیااور آٹا مافیا موجود مگر عمران خان نے آنکھیں بند کر رکھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں معاشی طور پر بد حال کرنے والا مافیا 70برس تک جس ڈگر پر چلا رہا تھا بد قسمتی سے تحریک انصاف کی حکومت بھی اسی راہ پر چل رہی ہے۔ آئے روز ایک نیا بحران جنم لیتا اور ایک نیا سکینڈل سامنے آرہا ہے۔ جبکہ حکومت کی کارکردگی اجلاسوں اور میڈیا بیانات تک محدو د ہو کر رہ گئی ہے۔ محمد جاوید قصوری نے اس حوالے سے مزید کہا کہ حکومت آئی ایم ایف کے ساتھ ہونے والے مذاکرات اور تمام معاہدے قوم کے سامنے لائے۔ پاکستان کی عوام کی قسمت کے فیصلے آئی ایم ایف کررہا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -