پاکستان کیلئے بڑا ریلیف، پیرس کلب نے مئی سے دسمبر تک قرضوں کی وصولی مؤ خر کر دی، ایشیائی ترقیاتی بینک نے بھی 50کروڑ ڈالر قرض کی منظوری دیدی

  پاکستان کیلئے بڑا ریلیف، پیرس کلب نے مئی سے دسمبر تک قرضوں کی وصولی مؤ خر کر ...

  

پیرس/منیلا(آن لائن،مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کو بیرونی قرضوں کی ادائیگی میں بڑا ریلیف مل گیا، پیرس کلب نے رواں سال مئی سے دسمبر کے دوران واجب الادا قرض کی وصولی موخر کردی۔ پاکستان نے ایک برس کے دوران پیرس کلب کو 78کروڑ 80لاکھ ڈالر ادا کرنے ہیں جبکہ پاکستان پیرس کلب کا مجموعی طورپر10ارب 92کروڑ ڈالر کا مقروض ہے۔ بدھ کے روز جاری اعلامیہ کے مطابق پیرس کلب نے پاکستان کا یکم مئی سے 31دسمبر 2020 تک واجب الادا قرض موخر کردیا جس سے پاکستان کو کورونا وبا سے نمٹنے اور قرضوں کی ادائیگی میں سہولت ہوگی۔ پیرس کلب میں کینیڈا، فرانس، جرمنی، جاپان، کوریا اور امریکہ سمیت 17ممالک شامل ہیں دوسری جانب

ایشیائی ترقیاتی بینک (اے ڈی بی) نے پاکستان کے لیے 50 کروڑ ڈالر قرض کی منظوری دے دی۔اعلامیے کے مطابق قرض غریبوں کے تحفظ، صحت کی سہولتوں میں توسیع اور کوروناصورتحال کے دوران روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لیے ہوگا۔صدر ایشیائی ترقیاتی بینک مساسوگا اساکاوا کا کہنا تھا کہ مشکل صورتحال میں پاکستان کی مکمل مدد کا عزم رکھتے ہیں۔خیال رہے کہ گزشتہ دنوں ایشیائی ترقیاتی بینک اور حکومت پاکستان کے درمیان معاہدے پر دستخط ہوگئے ہیں جس کے تحت اے ڈی بی 30 کروڑ ڈالر قرض اور 50 لاکھ ڈالر امداد کی صورت میں دے گا۔واضح رہے کہ اس سے قبل رواں سال مارچ میں بھی ایشیائی ترقیاتی بینک نے کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے 20 لاکھ ڈالر کی امداد کی منظور دی تھی۔

مزید :

صفحہ اول -