چینی سکینڈل پر نیب کو پہلا ریفرنس بھیج دیا، فوجداری مقدمات درج ہوں گے: شہزاد اکبر

  چینی سکینڈل پر نیب کو پہلا ریفرنس بھیج دیا، فوجداری مقدمات درج ہوں گے: ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے احتساب اور داخلہ شہزاد اکبر نے شوگر کمیشن کی رپورٹ کی روشنی میں کئے جانے والے اقدامات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماضی میں دی گئیں سبسڈیز کی بنیاد ہی غلط تھی،چیئرمین نیب کو سکینڈل سے متعلق پہلاریفرنس بھیج دیاگیا،سکینڈل سے متعلق نیب کارروائی کریگا،فوجداری قوانین کے تحت مقدمات درج ہوں گے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شہزاد اکبرنے کہاکہ وزیراعظم نے شوگر کمیشن سے متعلق معاملات کی منظوری دی تھی جووزیراعظم ہاؤس کی جانب سے مجھے موصول ہوچکی ہے۔میڈیا سے گفتگو کے دوران انہوں نے مزید کہا کہ جو نکات تجویز کیے گئے تھے وہ بھی منظور کیے گئے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ وفاقی کابینہ نے منظوری دی۔شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ 16صفحات پر مشتمل کارروائی کے نکات ہیں جس میں کمیشن کی روشنی میں جو تمام چیزیں کی جانی ہیں وہ شامل ہیں جس میں فوجداری مقدمات درج ہوں گے اور وصولی کیلئے ایف بی آر اور ایس ای سی پی کے معاملات ہیں۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ 5 برسوں کی 29 ارب روپے کی سبسڈی کاجائزہ لیا گیا اور اس سبسڈی میں جو بنیادی خلا نظر آیا وہ یہ تھا کہ کوئی قانونی فیصلہ نہیں تھا اور جس بنیاد پر سبسڈی دی گئی وہ بنیاد ہی غلط تھی۔شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ پاکستان کا کسان خوشحال نہیں کیونکہ گنا پہلے ہی سستا ہے اور حکومت جو قیمت مقرر کرتی ہے اس سے بھی 30 سے 35 فیصد کم قیمت گنے والوں کو ادا کی جاتی ہے جو اس کمیشن کی رپورٹ میں سامنے آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ برآمد کی مد میں جو شرط تھی ملوں نے اس کی خلاف ورزی کی۔شہزاد اکبر نے کہا کہ سبسڈی سے متعلق کارروائی قومی احتساب بیورو (نیب) نے کرنی ہے اور دوسری چیز ریکوری سے متعلق ہے جو ایف بی آر دیکھے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ایس ای سی پی اور ایف آئی اے کو کارپوریٹ فراڈ کے معاملات بھیجے ہیں، برآمد کی مد میں بے ضابطگیاں ہوئی ہیں وہ بھی شامل ہیں اور اس کے لیے طریقہ کار وضع کیا گیا ہے اور وقت بھی متعین کردیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ محکموں کے اندر لوگ مل مالکان سے ملے ہوئے ہیں، فراڈ آڈٹ والوں نے جان بوجھ کر نہیں پکڑا لیکن ان تمام آڈٹ فرمز کو بلیک لسٹ کیا جائے گا۔معاون خصوصی احتساب اور داخلہ کا کہنا ہے کہ ہم اپنے دور میں دی ہوئی 4 ارب روپے سبسڈی کی بھی انکوائری کر رہے ہیں۔ چینی کی قیمتوں کے تعین کیلئے وفاقی وزیر حماد اظہر کی سربراہی میں کمیٹی کام کریگی۔ شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ شوگرملزپرایک خاص طبقے کی اجارہ داری ہے، شوگرمافیابہت مضبوط ہے،ان کی پہنچ اداروں کے اندرتک ہے۔ فوجداری قوانین کے تحت مقدمات درج ہوں گے،نیب اور چینی سکینڈل سے متعلق بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کچھ افراد کو چینی سکینڈل کے حوالے سے نامزد کیا گیا ہے، نامزدافرادکے حوالے سے متعلقہ اداروں کوکارروائی کی ہدایت کی۔

شہزاداکبر

مزید :

صفحہ اول -