”سنتھیا ڈی رچی معاملہ، رحمان ملک اور پیپلز پارٹی کی خاتون کو ایک طاقتور شخصیت کا فون آیا اور انہوں نے کہا کہ ۔۔۔“ سینئر صحافی نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا

”سنتھیا ڈی رچی معاملہ، رحمان ملک اور پیپلز پارٹی کی خاتون کو ایک طاقتور ...
”سنتھیا ڈی رچی معاملہ، رحمان ملک اور پیپلز پارٹی کی خاتون کو ایک طاقتور شخصیت کا فون آیا اور انہوں نے کہا کہ ۔۔۔“ سینئر صحافی نے تہلکہ خیز دعویٰ کر دیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )امریکی بلاگر سنتھیا ڈی رچی نے پیپلز پارٹی کی سینئر قیاد ت پر نہایت سنگین الزامات کی بارش کر دی ہے جسکے باعث سیاسی حلقوں میں بے چینی پائی جارہی ہے اور ہر کوئی حیرانگ اظہار کرتا دکھائی دے رہاہے تاہم حکومت اس معاملے پر مکمل خاموش دکھائی دیتی ہے تاہم اب دونوں پارٹیوں کے درمیان قانونی جنگ کا آغاز ہونے جارہاہے لیکن اس سے قبل سینئر صحافی اعزاز سید نے تہلکہ خیز دعوے کر دیئے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی اعزاز سید نے یوٹیوب چینل پر اپنے ویڈیو بیان میں بتایاکہ پس پردہ اس وقت تہلکہ مچا ہواہے ،پیپلز پارٹی کے جن تین لیڈرز ر سنتھیا رچی نے الزاما ت لگائے ہیں ان کو پس چلمن حلقوں کی طرف سے ٹیلیفون گئے ہیں اور کہا گیاہے کہ ان کی طرف سے نہیں ہے اور وہ اسے سپورٹ نہیں کر رہے ہیں ۔

اعزاز سید کا کہناتھا کہ سنتھیا ڈی رچی مسلسل ٹویٹس کر رہی ہیں ، کچھ سیاسی رہنما جو پس چلمن اور اسٹبلشمنٹ سے رابطے میں رہتے ہیں انہوں نے گلہ شکوہ کیاہے ، جن سیاسی رہنماﺅں نے گلے شکوے کیے ہیں انہوں نے یہ باتیں اپنے قریبی دوستوں سے بھی کی ہیںاور ان باتوں کے بارے میں مجھے ذاتی طور پر علم ہواہے ۔

اعزاز سید کا کہناتھا کہ مجھے پتا چلا ہے کہ پیپلز پارٹی کی خاتون رہنما اور رحمان ملک کو ایک طاقتور شخصیت کی طرف سے ٹیلیفون آیا جس دورا ن گلے شکوے کیے گئے ہیں ، یہاں پر جو طاقت ور عہدیدار ہیں جنہیں ہم اسٹبلشمنٹ کہتے ہیں ، انہوں نے کہا ہے کہ ہمارا اس معاملے سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔

صحافی کا کہناتھا کہ جس اہم شخصیت کو ٹیلیفون نہیں آیا وہ سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی ہیں جبکہ مخدوم شہاب الدین اس وقت قرنطینہ میں چلے گئے ہیں اور وہ کسی سے بھی رابطہ نہیں کر رہے ہیں ، ان کے اہل خانہ اور دوست بھی کچھ بتانے سے گریزاں ہیں ۔سینئر صحافی کا کہناتھا کہ پس چلمن حلقوں میں سنتھیا رچی کے حوالے سے بہت سرگرمی پائی جارہی ہے۔

اعزاز سید کا کہناتھا کہ میں نے خود پولیس میں انٹیلی جنس کو پڑھایا ہے اور میں اس بارے میں خود بھی بہت پڑھتا رہاہوں ، اس لیے میں سنتھیا رچی کو بانا چاہتاہوں کہ انٹیلی جنس کی دنیا میں ایسٹ (اثاثے )اور لائیبیلٹی (بوجھ ، مجبوری )ہوتی ہیں ، ایسٹ کبھی بھی لائیبلیٹی بن جاتے ہیں ، جس کسی کی بھی وہ ایسٹ تھیں اب وہ لائیبیلٹی بن چکی ہیں ، سنتھیا رچی اب بے نقاب ہو چکی ہیں ، شائد جتنا کام ان سے لیا جانا تھا یا پھر خود انہوں نے کچھ غلطیاں کی جس کے باعث اس کے سرپرستوں کو ان کی مزید ضرورت نہیں رہی ۔

ان کا کہناتھا کہ سنتھیا ڈی رچی کا ویزا ختم ہو چکا ہے ، امریکہ اور پاکستان کے درمیان تعلقات کیلئے بھی وہ ایک چیلنج بن گئیں ہیں ، کچھ ڈپلومیٹ جنہوں نے کچھ سیاستدانوں سے رابطہ کیا اور کہا کہ وہ بھی اس حوالے سے پریشان ہیں ۔

مزید :

قومی -