ڈی آئی جی آپریشنز لاہور کی بہتر حکمت عملی، وارداتوں میں نمایاں کمی

ڈی آئی جی آپریشنز لاہور کی بہتر حکمت عملی، وارداتوں میں نمایاں کمی

  

لاہور (رپورٹ: یونس باٹھ)ڈی آئی جی آپریشنزساجد کیانی کی دلیرانہ حکمت عملی کے پیش نظرلاہور میں جرائم کی شرح میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے، شہر میں ہر 3منٹ بعد ہونیوالی وارداتیں تھم گئی ہیں،اسے لا ہور کی خوش قسمتی کہا جا سکتا ہے کہ یہاں ایک ایسے پولیس آفیسر کو ڈی آئی جی آپریشنز تعینات کیا گیا ہے جو 24گھنٹے امن و امان کی بحالی پر زور دے رہے ہیں، یہ ایک ایماندار، بہادر، دیانت دار پولیس آفیسر ہیں ان پر آج تک کرپشن کا الزام  لگا اور نہ ہی کبھی ان کے حوالے سے کسی قسم کا سیاسی ایجنڈا سامنے آیا ہے ساجد کیانی کی تعیناتی کے وقت لاہور پولیس بالخصوص آپریشنز ونگ بڑے مسائل سے دوچار تھا سابق ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق احمد خان نے لاہور میں مز ید کام کرنے سے معذرت کر لی تھی دوسری جانب وزیر اعظم نے بڑے بڑے مافیا کے خلاف کارروائی کا حکم دے رکھا تھا، وزیر اعظم کی خواہش پوری نہ ہونے سے لاہور پولیس مسلسل تبادلوں کی زد میں تھی، بڑے بڑے مافیا کو کچلنے کا دباؤ آئی جی پولیس پرتھا اور ایسے حالات میں لاہور میں کوئی بھی افسر کام کیلئے تیار نہ تھا،ڈی آئی جی ساجد کیانی نے ان تمام چیلنجز سے نبردآزماہونے اور شہر کو امن کا گہوارہ بنانے کا عندیہ دیتے ہوئے بطور کمانڈر آپریشنز ونگ جوائن کیا اور تھوڑے ہی عرصہ میں لاہور پولیس کے مورال کو بلندکردیا، اس میں کوئی شک نہیں کہ ساجد کیانی پولیس کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں اور ڈاکوؤں کی نرسری سمجھے جانیوالے شہر حافظ آباد میں بطور ڈی پی او،اسلام آباد میں بطور ایس ایس پی امن قائم کر چکے ہیں۔ساجد کیانی  انتہائی ملنسار، پیشہ وارانہ مہارتوں کے حامل اور محب وطن پو لیس آفیسر کے طور پر جانے جاتے ہیں وہ سمجھتے ہیں کہ بطور سول سرونٹ میرا کام قوم کی خدمت اور اپنا فرض ادا کرنا ہے۔ مجھے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ میری پوسٹنگ کہاں ہوتی ہے۔ میرا کوئی سیاسی ایجنڈا ہے اور نہ ہی مجھے اپنی تنخواہ سے زیادہ کی ضرورت ہے۔ ریاست کو جہاں میری ضرورت ہو گی میں وہاں اپنی ذمہ داریاں مکمل ایمانداری سے نبھاؤں گا۔ انہیں پولیس ویلفیئرکے حوالے سے بھی جانا جاتا ہے کیونکہ ساجد کیانی نے لا ہور میں پنجاب پولیس کی ویلفیئر کے لئے جتنے اقدامات کئے اس سے پولیس فورس کا مورال انتہائی بلند ہو اہے۔ یہ جہاں بھی گئے پنجاب پولیس کے شہداء کی فیملیز کو اپنی فیملی کی طرح عزت دیتے اور ان کے مسائل حل کرنے کی پوری کوشش کرتے ہیں۔ یہ کرائم فائٹر پولیس آفیسر کے طور پر بھی  جانے جاتے ہیں ہیں۔ انہیں کرائم کنٹرول کرنے میں ملکہ ہے، جس طرح وہ ایماندار افسران کی ٹیم تشکیل دے کر کرائم کنٹرول کرنے کی صلاحیتیں منوا چکے ہیں وہ اب کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں۔

ڈی آئی جی آپریشنز

مزید :

صفحہ آخر -