گرمی کی شدت میں اضافہ، شہری ٹھنڈے پانی کو ترسنے لگے، برف کا بلاک 1200تک جا پہنچا 

گرمی کی شدت میں اضافہ، شہری ٹھنڈے پانی کو ترسنے لگے، برف کا بلاک 1200تک جا ...

  

لاہور(خبر نگار) صوبائی دارالحکومت میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے باعث الیکٹرانک اشیاء جل جانے کے باعث لوگوں نے ٹھنڈا پانی پینے کیلئے برف کی دکانوں، پھٹوں کا رخ کر لیا۔ مہنگائی کے ستائے عوام مہنگی برف خریدنے پر مجبورہو گئے۔گرمی میں برف کے زیادہ استعمال کے باعث 500روپے میں ملنے والا برف کا بلاک 1200روپے تک فروخت ہونے لگا۔تفصیلات کے مطابق عوام کیلئے ایک اور آزمائش کی گھڑی آگئی، بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے باعث الیکٹرانک ساز و سامان جلنے یا خراب ہو جانے کی وجہ سے شدید گرمی میں پیاس سے نڈھال ٹھنڈا پانی پینے کیلئے برف کے استعمال کو ترجیح دیتی نظر آئی، دوسری جانب برف ڈپو مالکان نے برف کی مانگ میں اضافے کیساتھ ہی برف کے ریٹ بھی بڑھا دیئے ہیں۔”روزنامہ پاکستان“ کے سروے میں معلوم ہو اہے کہ برف کے بلاک کا ریٹ بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے قبل 500تا 600روپے تھا جو اب بڑھ کر 800تا 1200تک جا پہنچا ہے اسی طرح برف کی پٹی کی قیمت 120تا 170روپے تک وصول کی جا رہی ہے۔اس حوالے سے شہریوں کا کہنا تھا کہ پہلے ہی مہنگا ئی سے پریشان عوام کی زندگی بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے زندگی اجیرن کر رکھی ہے اوپر سے برف کے ریٹ بھی آسمانوں سے بات کر نے لگے ہیں۔

برف کا بلاک

مزید :

صفحہ آخر -