پاکستانی معیشت بہتر ی کی جانب گامزن، مستقبل میں درآمدات بڑھنے کے چیلنجز کا امکان: جے پی مورگن

پاکستانی معیشت بہتر ی کی جانب گامزن، مستقبل میں درآمدات بڑھنے کے چیلنجز کا ...

  

اسلام آباد، لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) عالمی مالیاتی ادارے جے پی مورگن نے کہا ہے پاکستان کی معیشت بہتری کی جانب گامزن ہے لیکن آنیوالے سال میں درآمد ات بڑھنے کے باعث اسے چیلنجز کا بھی سامنا ہے۔ پاکستان کی معیشت پر رپورٹ جاری کرتے ہوئے عالمی مالیاتی ادارے نے لکھا ہے کہ حالیہ مہینوں میں پاکستانی معیشت میں مثبت ترقی دیکھی گئی، جاری کھاتے مثبت ہونے کے با عث روپے کی قدر میں بہتری ہوئی۔ مالیاتی خسارہ بھی جی ڈی پی کے تناسب سے کم ہورہا ہے۔جے پی مورگن کی رپورٹ کے مطابق مالی سال 2022ء کا مالیاتی خسارہ جی ڈی پی کے 5.9 فیصد، جی ڈی پی کے تناسب سے قرض کی شرح 8.9 فیصد رہنے کا امکان ہے جبکہ جی ڈی پی کے تناسب سے قرض کی شرح 8عشاریہ5فی صد پر آسکتی ہے۔جے پی مورگن رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ مالی سال 2022 کے بجٹ میں بیرونی مالی اعانت اہم ذریعہ رہے گی جبکہ مالی سال 22ء میں درآمدات بڑھنے کے باعث جاری کھاتوں کا خسارہ بڑھ سکتا ہے،دوسری طرف وفاقی وزیر مملکت اطلاعات و نشریات فرخ حبیب نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ دنیا کے بڑے سر ما یہ کاری کے مالیاتی ادارے جے پی مورگن نے اپنی رپورٹ میں 2021 میں جی ڈی پی کی شرح 4.7، خسارہ 7.1فیصد اور آئندہ سال کا5.9 فیصد ہونے کی پیشگوئی کی ہے، پاکستان میں سرمایہ کاری کریں،یہاں معاشی حالات بہتر ہورہے ہیں۔ جے پی مورگن نے 2021 میں پاکستان کی جی ڈی پی کی شرح 4.7 کی پیشگوئی کی ہے۔رپورٹ کے مطابق آئندہ سال معاشی حجم 329ارب ڈالرہوگا۔ جے پی مورگن نے پاکستان کا اس سال کا بجٹ خسارہ 7.1فیصد اور آئندہ سال کا5.9 فیصد ہونے کی بھی پیشنگوئی کی ہے۔اس سے پاکستا ن کے قرضوں کی جی ڈی پی کے تناسب سے شرح 81.6 فیصد پر آجائیگی جو 2020میں 87.6تھی۔

جے پ مورگن

مزید :

صفحہ اول -