نجی، سرکاری سکولوں میں بنیادی سہولیات کا فقدان، بچے گرمی سے نڈھال

    نجی، سرکاری سکولوں میں بنیادی سہولیات کا فقدان، بچے گرمی سے نڈھال

  

  لاہور(خبرنگار)صوبائی دارالحکومت میں طلباء و طالبات کا مستقبل بہتر بنانے والے نجی و سرکاری سکولوں میں بنیادی سہولیات کے فقدان میں مزید اضافہ ہو گیا،  شدید گرمی اور لوڈشیڈنگ کے باعث تھوڑا بہت چلنے والے جنریٹرز او واٹر کولرز بھی جواب دے گئے جس کے باعث طلباء و طالبات کا پڑھائی جاری رکھنا انتہائی مشکل ہو گیا۔ماہرین تعلیم نے پہلی تا آٹھویں کلاسز معطل کرنے اور صبح 9 بجے امتحانات لینے کی تجویز دے دی  بنیادی سہولیات نہ رکھنے والے سکولوں کے خلاف کارروائی کیلئے ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں۔ تفصیلات کے مطابق گرمی کی شدت اور بجلی کی لوڈشیڈنگ میں اضافہ ہونے پر نجی و سرکاری سکولوں میں جنریٹرز، پنکھوں، واٹرکولرز سمیت دیگر بنیادی سہولیات کے فقدان میں بھی مزید اضافہ ہو گیا کلاس رومز کو ہوا دار رکھنا سکولز انتظامیہ کے لئے امتحان بن گیا  طلباء و طالبات شدید گرمی اور پسینے میں تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں جبکہ دوسری جانب متعدد نجی و سرکاری سکولوں میں لگائے گئے جنریٹرز، واٹر کولرز اور پنکھے خراب ہونے پر بند پڑے ہیں  طلباء و طالبات کا کہنا ہے کہ شدید گرمی اور لوڈشیڈنگ میں تعلیم جاری رکھنا انتہائی مشکل ہو چکا  کئی طلباء و طالبات شدید گرمی کے باعث بے ہوش اور بیمار ہو چکے ہیں۔ اس میں طلباء و طالبات اور والدین میں خوف و ہراس پھیل چکا ہے۔ لہٰذا حکومت سکولوں میں چھٹیاں دینے کا اعلان کرے دوسری جانب ماہرین تعلیم نے پہلی تا آٹھویں کلاسز کومعطل کرنے کی تجویز پیش کر دی اور اوکات کار 7 بجے تا 9 بجے تک رکھنے سمیت 9 بجے امتحانات لینے کی بھی تجویز دے دی دوسری جانب پرائیویٹ سکولز سربراہان کا کہنا ہے کہ گرمی کے زور بڑھنے کے باعث جنریٹرز ہیٹ اَپ ہو جاتے ہیں جنہیں تھوڑی دیر کے لئے بند رکھ کر دوبارہ چلایا جاتا ہے پنکھوں کی صورتحال بہتر ہے۔ پانی کا بندوست بھی ہر ممکن یقینی بنایا گیا ہے جبکہ سرکاری سکولوں کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ سکولز کورونا وباء  کے دوران بند رہے ہیں اس لئے کلاس رومز، واش رومز اور واٹر کولرز کی حالت متاثر ہوئی ہے جنہیں چالو حالت میں لانے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں اس حوالے سے ترجمان سکولز ایجوکیشن کا کہنا ہے کہ جن سکولوں میں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے وہاں کی انتظامیہ کے خلاف سخت ایکشن لینے کے لئے ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں  شدید گرمی اور بجلی کی لوڈشیڈنگ کا سب کو سامنا ہے تاہم سکولز سربراہان کو تنبیہ کی گئی ہے کہ درس و تدریس سمیت بنیادی سہولیات کی فراہمی کو ہر ممکن یقینی بنایا جائے۔

سہولیات کافقدان 

مزید :

صفحہ اول -