فیڈریش آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈسٹری کا اجلاس

فیڈریش آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈسٹری کا اجلاس

  

پشاور(سٹی رپورٹر)فیڈریش آف پاکستان چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈسٹری ریجنل آفس پشاور میں کا اہم اجلاس نائب صدر محمد زاہد شاہ کی ہدایت پرریلوے سنٹرل اسٹینڈنگ کمیٹی ایف پی سی سی آئی کے کنونیئر ضیائالحق سرحدی کی زیرصدارت میں منعقد ہوا جس میں ڈپٹی کنونیئر امتیازاحمد علی، ممبر فاروق احمد، ایف پی سی سی آئی پشاور ریجنل سیکرٹری ایف پی سی سی آئی میاں محمد وصال، اسسٹنٹ منیجر انجنیئرخالد حیدر جبکہ کراچی سے قاضی زاہدحسین، عامر الطاف،راجہ آصف، طحہ نوازپراچہ، کوئٹہ سے عمران خان کاکڑنے ویڈیو لنک کے ذریعے شرکت کی۔ اجلاس میں ضیائالحق سرحدی، امتیاز احمد علی اور ممبرفاروق احمد نے کہاکہ ریلوے لوز کارگو کی اجازت دی جائے، اضاخیل ڈرائی پورٹ میں سہولیات کا فقدان ہے، اور اگر اضاخیل ڈرائی پورٹ پر ریلوے سہولیات دے تو خیبرپختونخوا کے انڈسٹری مالکان مارکیٹ میں مقابلے کے قابل ہوجائینگے جبکہ ایکسپورٹر اور امپورٹر کے مسائل بھی حل ہوجائینگے، سمندر سے دوری کی وجہ سے خیبرپختونخو ا کے بزنس کمیونٹی کراچی سے امپورٹر ا مال اور انڈسٹری حام مال بانڈکیرئیر کے ٹرکوں کے ذریعے لاتے ہیں لیکن سندھ حکومت نے سس ٹیکس کے نام پر 1.25 فیصدر اور خیبرپختونخوا حکومت بھی سس ٹیکس کے نام پر ایک فیصد ٹیکس لیتاہے جو ڈبل ٹیکسیشن کے زمرے میں آتاہے۔گڈاینڈ ٹرانزٹ ٹو افغانستان (گیتا) کو کراچی سے پشاور، چمن ریلوے کے ذریعے فعال کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ 1965ئسے 2010ئتک لوزکارگوکی اجازت تھی جس پر 2010ئمیں SRO121کے تحت پابندی عائد کی گئی جس کی وجہ سے تجارت اور گیتا کے مال چاہ بہار اور بندعباس کے ذریعے امپورٹ شروع ہوگئی ہے جس کے کے باعث خیبرپختونخوا میں کسٹم کلیئرنگ ایجنٹس اورفارونڈنگا یجنٹس بے روزگار ہوگئے ہیں جبکہ افغانستان اور وسطی ایشیائی ریاستوں کے منڈیاں بھی بزنس کمیونٹی کے ہاتھ سے نکل رہاہیں حکومت اور ریلوے حکام مسائل حل کرے اور اضاخیل ڈرائی پورٹ میں سہولیات دیں 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -