بینک اسلامی نے نیٹ ورکنگ انفرااسٹرکچرہواوے پر منتقل کردیا 

بینک اسلامی نے نیٹ ورکنگ انفرااسٹرکچرہواوے پر منتقل کردیا 

  

 کراچی(اسٹاف رپورٹر)ملک کے اعلیٰ ترین اسلامک فنانس ادارے، بینک اسلامی نے پاکستان میں ڈیجیٹل سہولتوں کی زیادہ سے زیادہ فراہمی کی کوششوں کے تسلسل میں، اپنی برانچ کی سطح پر کنیکٹیویٹی انفرااسٹرکچر کو بہتر بنانے اور اسے اپ گریڈ کرنے کے لیے خطیر سرمایہ کاری کی ہے۔بینک نے تیکنیکی لحاظ سے مکمل طور پر جانچ پڑتال کرنے اور ان تصورات کے ثبوت کے حصول کے بعد، پاکستان میں اپنی تمام فزیکل لوکیشنز پر برانچ راؤٹرز اور سوئچز سمیت اپنے وائیڈ ایریا نیٹ ورک (WAN) کو Huawei  پر منتقل کردیا ہے۔ اس اقدام سے بینک کابنیادی مقصد صارفین کو سہولیات کی فراہمی اور معمول کے مطابق کاروباری امور کی انجام دہی کے لیے ایک مستحکم نظام بنانا ہے۔ بینک اسلامی انتہائی کم وقت میں ایسے معروف اور جدیدترین ٹیکنالوجی کے حامل مالیاتی اداروں میں شمار کیا جانے لگا ہے، جو اپنے صارفین کو مستند، شرعی اصولوں پر مبنی پراڈکٹس اور سروسز فراہم کرتے ہیں۔ہر چند یہ کہHuawei کے ساتھ الحاق/تعلق کے ذریعے نیٹ ورکنگ انفرااسٹرکچر کی تبدیلی  بینک کے لیے ایک پیچیدہ عمل ہے تاہم یہ ایک انتہائی ضروری امر ہے کہ برانچوں کو کسٹمرز کے بدلتے ہوئے طرز عمل اور ان کی ضروریات کے مطابق ڈھالا /تبدیل کیا جائے۔ٹیلی کمیونیکیشن انڈسٹری میں Huawei کے نیٹ ورکس کو بڑے پیمانے پر استعمال کیا جاتا ہے۔Huawei نے گزشتہ کئی سالوں میں اپنی قابل اعتماد ساکھ کو مستحکم کیا ہے اوران کی جانب سے اعلیٰ معیار کی مسلسل فراہمی ہی وہ امر ہے کہ جس نے بینک اسلامی کی توجہ ان کی جانب مبذول کرائی ہے۔ترقیاتی امور پر گفتگو کرتے ہوئے بینک اسلامی کے صدر اور سی ای او، سید عامر علی نے کہا کہ "ہم سب پر گزشتہ چند سالوں میں ڈیجیٹیلائیزیشن کی اہمیت و افادیت واضح طور پر عیاں ہوچکی ہے۔بینک اسلامی ڈیجیٹل چینلز کی صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے  اپنے کسٹمرز کی آسانی اورانہیں سہولیات کی فراہمی کے لیے مستقل بنیادوں پر نئی منزلوں کی تلاش میں سرگرداں ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -