پاک آرمی کا دِفاعی بجٹ ملکی بجٹ کا7 فیصد لیکن اہلکاروں و افسران کی تنخواہوں میں اضافہ ہوا یا نہیں؟خبرآگئی

پاک آرمی کا دِفاعی بجٹ ملکی بجٹ کا7 فیصد لیکن اہلکاروں و افسران کی تنخواہوں ...
 پاک آرمی کا دِفاعی بجٹ ملکی بجٹ کا7 فیصد لیکن اہلکاروں و افسران کی تنخواہوں میں اضافہ ہوا یا نہیں؟خبرآگئی

  

 اسلام آ باد (آئی این پی) بجٹ 2021-22 میں بھی پاک افواج کی تنخواہوں میں کوئی اضافہ نہیں ہوا،، پاک آرمی کا دِفاعی بجٹ ملکی بجٹ کا7% ہے،بھارت پاکستان کی نسبت اپنے ایک فوجی پر سالانہ 4گنا زیادہ خرچ کر تا ہے،پاکستان اپنے ایک فوجی پر سالانہ12500ڈالر خرچ کر تا ہے جبکہ انڈیا 42000ڈالر ،سالانہ دِفاعی اخراجات کے حوالے سے بھارت دُنیا کا تیسرا بڑا ملک ہے،2014سے2019ءتک بھارت کا دِفاعی بجٹ 51سے71بلین ڈالر تک بڑھ گیا مگر پاکستان کا دِفاعی بجٹ جوں کا توں رہا ،بھارت کا دِفاعی بجٹ پاکستان کی نسبت 6سے7گُنا زیادہ ہے،بھارت2016ءسے2020ءکے دوران دُنیا کا دوسرا بڑا اسلحہ درآمد کرنے والا ملک رہا،بھارت صرف نئے اسلحہ کی خریداری کے لیے سالانہ لگ بھگ18سے19بلین ڈالر لگاتا ہے جو کہ پاکستان بجٹ کا تقریباََ 2گُنا ہے۔

 تفصیلات کے مطابق سال2021 / 22کا دِفاعی بجٹ مجموعی قومی بجٹ کا 16%ہے، پاک آرمی کا دِفاعی بجٹ ملکی بجٹ کا7% ہے،موجودہ دِفاعی بجٹ GDPکا 2.8% ہے،2019 / 20میں ملکی معاشی صورتحال کے پیشِ نظر دِفاعی بجٹ منجمد رہا،2020 / 21میں بھی پاک افواج کی تنخواہوں میں کوئی اضافہ نہیں ہو ا،ان سالوں میں روپے کی قدرمیں کمی اور افراطِ زر کے باوجود دِفاعی ضروریات کو دستیاب وسائل کے اندر رہتے ہوئے پورا کیا گیا،2018ءکے بعدکولیشن سپورٹ فنڈ کی بندش کے باوجود دِفاعی اور سیکورٹی کی ضروریات کو ملکی وسائل سے ہی پورا کیا گیا ،ردّالفساد کے اہداف اور دائرہ کار اور دیگر سیکورٹی اُمور میں کوئی کمی نہیں آنے دی گئی۔ ٹِڈی دَل اور کرونا کی وَبا کے خلاف قومی مہم میں پاک فوج نے بھرپور کردار ادا کیا مگر سول انتظامیہ کی معاونت میں ان فرائض کی انجام دہی کے دوران کوئی الا¶نس نہیں لیا گیا،کرونا وَبا کے خلاف قومی جنگ میں دِفاعی بجٹ سے ہی 2.56ارب روپے صَرف کئے گئے۔لیکن اضافی ڈیمانڈ نہیں کی گئی۔

ٹِڈی دَل کے خلاف مہم میں بھی دِفاعی بجٹ سے ہی297ملین روپے خرچ ہوئے،چیف آف آرمی سٹاف کی ہدایت پر گذشتہ سالوں میں دِفاعی آلات و مصنوعات کی مقامی تیاری (indigenisation)پر خصوصی توجہ دی گئی تاکہ ملکی زرِ مبادلہ میں کمی واقع نہ ہو،پاک افواج نے بالواسطہ اور بلاواسطہ ٹیکس کی مَد میں سال2019-20 میں 190 ارب روپے سے زائد رقم قومی خزانے میں جمع کرائی،25.8ارب روپے انکم ٹیکس، کسٹم سرچارج اور سیلز ٹیکس کی مَد میں جمع ہوئے،پاک افواج کے رِفاعی اداروں نے 164.239ارب روپے ٹیکس اور ڈیوٹیز کی مَد میں ادا کئے،ان اداروں میں آرمی ویلفئیر ٹرسٹ، فوجی فاونڈیشن، نیشنل لاجسٹکس سیل اور فرنٹئیر ورکس آرگنائزیشن شامل ہیں۔ 

بھارت پاکستان کی نسبت اپنے ایک فوجی پر سالانہ 4گنا زیادہ خرچ کر تا ہے،پاکستان اپنے ایک فوجی پر سالانہ12500ڈالر خرچ کر تا ہے جبکہ انڈیا 42000ڈالر خرچ کرتا ہے،امریکہ اپنے ایک فوجی پر سالانہ 392,000ڈالر جبکہ سعودی عرب371,000ڈالر خرچ کرتا ہے،سالانہ دِفاعی اخراجات کے حوالے سے بھارت دُنیا کا تیسرا بڑا ملک ہے،2014سے2019ءتک بھارت کا دِفاعی بجٹ 51سے71بلین ڈالر تک بڑھ گیا مگر پاکستان کا دِفاعی بجٹ جوں کا توں رہا ،بھارت کا دِفاعی بجٹ پاکستان کی نسبت 6سے7گُنا زیادہ ہے،بھارت2016ءسے2020ءکے دوران دُنیا کا دوسرا بڑا اسلحہ درآمد کرنے والا ملک رہا،بھارت صرف نئے اسلحہ کی خریداری کے لیے سالانہ لگ بھگ18سے19بلین ڈالر لگاتا ہے جو کہ پاکستان بجٹ کا تقریباََ دوگُنا ہے۔

مزید :

بجٹ -