ایک ایک بستر پر جا کر گولیاں ماری گئیں، افغانستان میں فلاحی تنظیم کے کیمپ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی گئی 

ایک ایک بستر پر جا کر گولیاں ماری گئیں، افغانستان میں فلاحی تنظیم کے کیمپ پر ...
ایک ایک بستر پر جا کر گولیاں ماری گئیں، افغانستان میں فلاحی تنظیم کے کیمپ پر حملے کی ذمہ داری قبول کرلی گئی 

  

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک) افغانستان میں دو روز قبل فلاحی تنظیم’ہالو ٹرسٹ‘ کے کیمپ پر دہشت گردانہ حملہ کیا گیا اور تنظیم کے 10ملازمین کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔ افغان حکومت کی طرف سے اس ہولناک واردات کی ذمہ داری طالبان پر ڈالی گئی تھی تاہم طالبان نے اس سے انکار کر دیا۔ اب بالآخر شدت پسند تنظیم داعش نے اس واردات کی ذمہ داری قبول کر لی ہے۔

 ڈیلی سٹار کے مطابق شدت پسند تنظیم داعش کے دہشت گرد کیمپ میں گھسنے کے بعد ایک ایک بستر پر گئے اور ملازمین کو گولیاں مار کر قتل کیا۔ رپورٹ کے مطابق ہالو ٹرسٹ ایک برطانوی فلاحی تنظیم ہے، جس کی شہزادہ ہیری بھی معاونت کرتے رہتے ہیں۔

 ٹرسٹ کے 57سالہ چیف ایگزیکٹو آفیسر جیمز کووین کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں نے کیمپ میں موجود تمام لوگوں پر فائرنگ کی۔ انہوں نے کسی ایک کو بھی اس بربریت سے مستثنیٰ نہیں رکھا اوہ ایک ایک بستر پر گئے اور سوتے ہوئے ملازمین کو گولیاں ماریں۔واضح رہے کہ یہ بربریت افغانستان کے صوبہ بغلان کے ضلع بغلان ہیڈکواٹر میں ہوئی، جس میں تنظیم کے 16ملازمین شدید زخمی بھی ہوئے۔

مزید :

بین الاقوامی -