جنوبی کوریا میں ملزم سینکڑوں شہریوں کی عریاں تصویریں اور ویڈیوز بیچنے کے جرم میں گرفتار

جنوبی کوریا میں ملزم سینکڑوں شہریوں کی عریاں تصویریں اور ویڈیوز بیچنے کے جرم ...
جنوبی کوریا میں ملزم سینکڑوں شہریوں کی عریاں تصویریں اور ویڈیوز بیچنے کے جرم میں گرفتار

  

سیول(رضا شاہ)جنوبی کوریا کی پولیس نے ایک شہری کو 13سو سے زیادہ نابالغ لڑکوں اور مردوں کی عریاں تصاویر اور ویڈیوز فلمانے اور بیچنے کے الزام میں گرفتار کرنے کے بعد مزید تحقیقات شروع کر دی ہیں۔ کم ینگ جون نامی اس شخص پر الزام ہے کہ اس نے تقریبا 27 ہزار افراد کی عریاں ویڈیو بنائیں جن میں 39 نابالغ بھی شامل ہیں اور اِن ویڈیوز کو 2013 سے لے کر اب تک آن لائن شیئر کیا گیا۔ 29 سالہ نوجوان جب پہلی بار صحافیوں کے سامنے پیش ہوا تو اس نے الزامات کو قبول کرتے ہوئے کہا کہ مجھے متاثرین پر بہت افسوس ہے اور میں آئندہ ایسے کام نہ کرنے کا وعدہ کرتا ہوں۔

 پولیس کے مطابق مجرم مردوں سے ملنے کے لئے ایک خاتون کا روپ دھارتا تھا اور ویڈیو کال کے دوران انہیں برہنہ ہونے پر مجبور کر دیتا تھا۔ شک سے بچنے کیلئے وہ انٹرنیٹ پر پائی جانے والی خواتین کے فحش مواد کا استعمال کرتا تھا اور مختلف آلوں کی مدد سے آواز کو بھی عورتوں کی آواز میں بدل لیتا تھا۔ پولیس نے ایک شخص کی شکایت موصول ہونے کے بعد اپریل میں تحقیقات کا آغاز کیا تھا اور تین جون کو ملزم کو اس کے گھر پر گرفتار کیا گیا تھا۔ پولیس ایسے افراد کی بھی تلاش کر رہی ہے جنہوں نے ملزم سے نازیبا ویڈیوز کی خریداری کی۔ پولیس حکومت سے مل کر نازیبا مواد کو حذف کرنے اور انٹرنیٹ سے ہٹانے کے لئے کام کر رہی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -