پہلی فون کال پہ ہی ہاں بول دیں  

 پہلی فون کال پہ ہی ہاں بول دیں  
 پہلی فون کال پہ ہی ہاں بول دیں  

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 پی ٹی سی ایل ایک نیم سرکاری ادارہ ہے۔ لیکن حرکتیں ساری خالص سرکاری اداروں جیسی ہیں۔ یعنی تمام سرکاری اداروں کی طرح ذمہ داری نام کو نہیں۔ مجھے ہرمہینے باقاعدگی سے میسج آتا ہے۔ پیارے صارف براہ کرم اپنا  ×××× کا بل پی ٹی سی ایل نمبر ××××××××پر آج ہی ادا کر دیں کہ اگر پہلے ہی ادا کر دیا جائے تو تاخیر سے ادائیگی کے سرچارج سے بچا جا سکے۔ یہ میسج آج سے دو سال قبل میرے موبائل نمبر پہ آیا تھا، اور تا دم تحریر باقاعدگی سے آرہا ہے۔  میسج پہ آنے والا نمبر  میرا پی ٹی سی ایل نمبر نہیں تھا، اس لیئے میسج نظر انداز کردیا۔ کہ ہوسکتا ہے غلطی سے میسج آگیا ہو۔ لیکن پھر  ہر ماہ باقاعدگی سے میسج آنے لگا۔ جب یہ سلسلہ چھ ماہ تک نہیں رکا تو 1218 پہ کال کرکے شکائیت درج کروائی کہ کسی دوسرے کا بل میرے موبائل پہ آتا ہے۔ مجھے یقین دہانی کروائی گئی کہ میڈم آپکا موبائل نمبر وہاں سے  چوبیس گھنٹوں کے اندر ریموو کر دیا جائے گا۔ میں بھی مطمئن ہوگئی۔ لیکن اگلے ماہ پھر بل کا میسج موجود تھا۔ سوچا دفعہ کرو، جہاں اتنے  میسج ڈیلیٹ ہوتے ہیں ایک یہ بھی سہی۔ چھ مہینے مزید گذر گئے اور  بات میسج سے آگے بڑھنے لگی۔ اب کراچی کے پی ٹی سی ایل نمبر سے کالز آنا شروع ہوگئیں، پی ٹی سی ایل آپ کے لئے موبائل کال پیکج لایا ہے۔ اگر آپ کہیں تو موبائل  کال پیکج کر کے  بل آپ کے پی ٹی سی ایل بل میں جمع کر دیا جائے۔ تشویش ہوئی کہ شائید کوئی فراڈ ہے، بنا کچھ کہے کال بند کردی۔ لیکن جب متواتر ایسی کالز آنے لگیں تو عرض کی حضور  نہ میں کراچی میں رہتی ہوں نہ یہ نمبر  ×××××× میرا ہے۔ آپ نے غلطی سے میرا نمبر ایڈ کردیا ہوا ہے، اس کی پہلے بھی شکائیت درج کرائی جا چکی ہے۔  اوہو میڈم بہت معذرت ہم آج ہی اس مسلئے کوحل کرتے ہیں۔ دو منٹ رکیں۔ جی آپ کی شکائیت فارورڈ کر دی گئی ہے، چوبیس گھنٹوں کے اندر اس پر عمل ہو جائے گا۔ آپ کا کمپلین نمبر ××× ہے۔ یہاں تک بھی ٹھیک  تھا۔ لیکن ایسا پھر آئے دن ہونے لگا۔ میسجز یا ایک دو بار کی کال تک بات رہتی تب بھی گوارا تھا لیکن کال کا سلسلہ بڑھنے لگا۔

بے شک رسیو نہ کرو تب بھی بلاناغہ کالز آتیں۔ کسی وقت بے دھیانی میں کال رسیو ہوجاتی تو وہی پرانا راگ۔ میں تنگ آگئی اس بے مقصد کالز سے۔ ایک دن خلاف معمول فراغت بھی تھی اور موڈ بھی تھا سو کال کرنے والی کی رج کے بے عزتی کی۔ میڈم نے بہت تحمل سے سب سنا اور بولیں آپ 1218 پہ شکائیت درج کروائیں وہ فوراً مسلہ حل کریں گے۔ 1218 پہ کال کی تو وہ ایک بار پھر بولے کمپلین فارورڈ کر دی ہے۔ لیکن اس پہ عمل نہ ہو سکا۔ ایک دن پھر انجانے میں کال رسیو ہوگئی، اب  جتنی بد زبانی مجھے آسکتی تھی، کر کے دیکھ لی۔ جواب وہی ہر بار والا ملا۔ سوری میڈم بہت شرمندہ ہیں کمپلین فارورڈ کردی گئی ہے۔ دل چاہا اپنے سر کے بال نوچ لوں، لیکن قصور تو کسی اور کا تھا۔ لیں جناب ایک بار پھر کال آئی ہے۔ اور اس بار مجھے غصہ بالکل نہیں آیا۔ جتنی بد تہذیبی پہلے دکھا چکی تھی، اس سے کہیں زیادہ شائستگی سے بات کی۔ اور کال پیکج کی مکمل تفصیل حاصل کی۔  چھ سو  بار کا دہرایا ہوا رکارڈ چل پڑا۔ اب کی بار میں بھی حوصلے سے ذرا آگے کا سفر طے کر رہی تھی۔ وہ یو فون نمبر پہ ماہانہ  پیکج دے رہے تھے جس کا بل اس پی ٹی سی ایل بل میں جمع ہوکر آنا تھا جو ظاہر ہے میرا نہیں تھا۔ میں نے اس دفعہ شکائیت درج نہیں کروائی، بلکہ اپنی ایمانداری پہ دو حرف بھیجے اور  دل ول فراڈ شریف کرتے ہوئے آفر ایکٹیویٹ کروالی۔ انج تے فیر انج ای سہی۔ اب  پی ٹی سی ایل والے جانیں اور کراچی کا معزز صارف جانے۔ جب بل آئے گا تو  بینک والے خود ہی دیکھ لیں گے کہ یہ ایک بینک کا نمبر ہے۔ لیکن جو بھی ہے آپکا میری نیت پہ شک کرنا بنتا نہیں کہ اس دھوکہ دہی کی نیت ہرگز نہ تھی نہ ہے۔ کہ اصل مقصد اپنا نمبر ریموو کروانا ہے۔ یہاں ایک مسرت بھرا خدشہ بہرحال موجود  ہے کہ اگر  بینک والوں نے بھی کاہلی کا ثبوت دیا تو۔


اس تو کے آگے الفاظ ختم اور خوشی شروع ہوجاتی ہے کہ ظاہر ہے مجھے یو فون کے نمبر پر 200 منٹس ہر ماہ تب تک فری ملیں گے جب تک کوئی یہ آفر ختم نہیں کروائے گا۔ اور تب تک موجاں ای موجاں۔ سمجھیں یہ خدا کی کرم نوازی ہے  جو ادارے کی نااہلی کی وجہ سے مجھ پر ہورہی تھی خدا مجھے چھپر پھاڑ کر فری منٹس دینا چاہتا تھا اور میں مسلسل ناشکری کررہی تھی، لیکن اب میں تائب ہوگئی ہوں۔ اگر آپ پہ بھی قدرت اس طرح مہربان ہورہی ہے تو بخدا میری طرح کفران نعمت مت کیجیئے بلکہ پہلی فون کال ہی پہ ہاں بول دیں۔

مزید :

رائے -کالم -