موجود ہ حالات میں بجٹ متوازن ‘ معاشی استحکام آئیگا ‘ ردعمل 

موجود ہ حالات میں بجٹ متوازن ‘ معاشی استحکام آئیگا ‘ ردعمل 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


ملتان ‘ خان پور ( خصوصی رپورٹر ‘ نمائندہ پاکستان ) ملتان ٹیکس بار ایسوسی ایشن میں آج بجٹ24 -2023 کے حوالے سے اجلاس منعقد ہو ا جس میں میں موجود ممبران ٹیکس با ر نے بجٹ کے حوالے سے اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔صدر بار ملتان ٹیکس بار ایسوسی ایشن نوید ظفر احمد شیخ نے خطا ب کر تے ہو ئے کہا کہ ملک میں ایک لاکھ ڈالر تک لانے والوں سے آمدن کا ذریعہ نہیں پوچھا جائے گا اور غیر ملکی کرنسی کی ذخیرہ اندوزی پر سزا دینا خوش آئند اقدام ہے۔جنرل سیکرٹری(بقیہ نمبر2صفحہ6پر )
 ٹیکس بار عمران نواز نے کہا کہ زرعی آلات اور بیجوں پر ڈیوٹی ختم کرنے سے ملک میں زرعی خوشحالی آئے گی۔ سابق صدر ٹیکس بارشبیر فخرالدین نے کہاکہ آئی ٹی کے شعبہ پر ٹیکس کی چھوٹ سے ملک میں زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافی اور روزگار کے مواقع فراہم ہونگے۔سابق صدر ٹیکس بار چوہدری خالد اسدمتبادل توانائی کے شعبے میں ٹیکس کی چھوٹ سے ملک میں توانائی کی ضرورت پوری ہونگی۔ممبر ٹیکس با ر امجد جاوید ہاشمی ایڈووکیٹ سپریم کورٹ نے کہا کہ تمام ضروری اشیا کی درآمد پر اضافی ٹیکس نہ لگانے سے منہگائی میں کمی آے گی۔ممبر ٹیکس با ر فیصل بشیر انصاری نے کہا کہ تنخواہوں میں اضافے سے تنخواہ در طبقے کو کچھ سکون ملے گا۔ صفدر بشیر انصاری۔ محمد اویس نے بھی بجٹ24-2023 کے اوپر پر اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔ملتان چیمبر آف سمال ٹریڈرز اینڈ سمال انڈسٹری کے صدر شیخ فیصل سعید نے وفاقی بجٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے نان فائلرز کو فائلر بننے کی ترغیب اور زراعت کے شعبے کی ترقی کے لیے بہت سی مراعات کا اعلان کیا ہے جو خوش آئند ہے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ تازہ بجٹ میں سب سے زیادہ توجہ آئی ٹی سیکٹر کو دی گئی ہے، فری لانسرز پر ٹیکس کی شرح کو کم کردیا گیا ہے۔ آئی ٹی کے شعبے میں ایکسپورٹ کرنے والی کمپنیوں کو کمپیوٹر وغیرہ درآمد کرنے پر چھوٹ دی گئی ہے تاہم برآمدی صنعتوں کو بھی اہمیت دی جانی چاہیے تھی۔انہوں نے کہا کہ بجٹ میں ایکسپورٹ ڈویلپمنٹ کونسل کا قیام اور سولر انرجی پر ٹیکس چھوٹ حوصلہ افزا ہے، انرجی سیکٹر پر ویلنگ پالیسی کو نظر انداز کیا گیا ہے، زراعت کے شعبوں پر بڑا ریلیف دینا ملکی ضرورت تھی سنی تحریک پنجاب کے صوبائی جنرل سیکرٹری جواد حسن گل قادری چشتی نے کہا ہے کہ غریب عوام کو مزید پریشان اور مشکلات میں نہیں دیکھ سکتے۔ حکومت بجلی گیس کے نرخوں اور ضرورت اشیائکی قیمتوں میں فوری کمی کا اعلان کرے۔غریب کو ریلیف دیئے بغیر ملک معاشی طور پر ترقی کی جانب گامزن نہیں ہوسکتا۔ غریب مزدور ہی دن رات محنت مزدوری کرکے ملک کے معاشی نظام کو مضبوط بنانے کیلئے کوشاں رہتے ہیں۔ معاشی طور پر ملک عدم استحکام کا شکار ہے اور حکمران طبقہ معیشت کو روبصحت کرنے کی بجائے قرضے لینے میں مصروف ہے۔ عوام سے کئے گئے وعدے اور دعوئے کرنے والے عیش وعشرت کی زندگی گذار رہے ہیں اور غریب کسمپرسی کی زندگی گذارنے پر مجبور ہے۔ عوام کو سڑکو پر آنے پر مجبور نہ کیا جائے۔ حکمران معاشی پالیسیوں کو عوام دوست بنائیں۔ آئی ایم ایف کے قرضوں سے غربت بڑھے گی اور مہنگائی میں بھی اضافہ ہوگا۔ سےد محمد عاصم شاہ چےئرمےن ا ٓ ٓل پاکستان بےڈ شےٹ اےنڈ اَپ ہولسٹری مےنوفےکچررز اےسوسی اےشن نے وفاقی بجٹ 2023-24 پر رائے کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حالات مےں بجٹ نہاےت متوازن اور اس سے ملک مےں معاشی استحکام کو فروغ ملے گا۔چےئرمےن APBUMA نے کہا کہ اےس اےم اےز ملکی معےشت کا اےک جز ہےں اور پائےدار ترقی کے لئے چھوٹے اور درمےانے درجے کے کاروبار پر خصوصی توجہ دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ 2023-24 مےں SMEs کے نئے قرضوں کی فراہمی ، ٹےکس مراعات کے لئے ٹرن کی حد کو 25 سے 80 کروڑ کرنا، بےنکوں کی حوصلہ افزائی کے لئے قرضہ جات سے حاصل آمدن پر ٹےکس کی کمی اور کئی دےگر اعلانات کئے گئے ہےں جو ناصرف حوصلہ افزاءہےں بلکہ چھوٹے اور درمےانے درجہ کے کاروبار کی بحالی کا باعث بھی بنےں گے۔ سےد محمد عاصم شاہ نے کہا کہ برآمدی صنعت کا فروغ اےک پائےدار معاشی استحکام کے لئے نہاےت ضروری ہے۔ ٹےکسٹائل کا شعبہ برآمدات کی تروےج کے لئے تجوےز کردہ اقدامات کو خوش آمدےد کہتاہے۔ انہوں نے کہا کہ Export Council of Pakistan کے قےام کا اعلان کےا گےا ہے۔جس مےں وزےراعظم کی سربراہی مےں تمام سٹےک ہولڈرز کی نمائندگی کو ےقےنی بناےا جائے گا۔ انہوں نے امےد ظاہر کی کہ اس کونسل مےں خاص طور پر SMEs سےکٹر کو نمائندگی دی جائے تاکہ پالےسی سازی مےں کئی سالوں سے نظر انداز کی جانے والے شعبہ کو بھی شامل کےا جا سکے۔ اس کے علاوہ ٹےکسٹائل انڈسٹری کے لئے ملکی سطح پر تےار ہونے والے Synthetic Filament yarn پر رےگو لےٹری ڈےوٹی کے خاتمے کو بھی اےک مثبت قدم قرار دےا۔سےد محمد عاصم شاہ نے کہا کہ بجٹ مےں غےر روائتی برآمدی شعبہ جےسے آئی ٹی سےکٹر کی حوصلہ افزائی کی گئی ہے جس سے نہ صرف ملک کے لئے قےمتی زرمبادلہ حاصل ہو گا بلکہ ہزاروں نوجوانوں کو روز گار بھی مےسر ہو گا