پیپلز پارٹی کا ہتک عزت بل کیخلاف عدالت جانے کا اعلان 

پیپلز پارٹی کا ہتک عزت بل کیخلاف عدالت جانے کا اعلان 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

                                                                                    لاہور (این این آئی) پاکستان پیپلز پارٹی وسطی پنجاب کے جنرل سیکرٹری سید حسن مرتضیٰ نے ہتک عزت بل کے خلاف عدالت جانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسکے وقت کا فیصلہ پارٹی کرے گی،پیپلز پارٹی آزادی اظہار رائے پر قدغن لگانے کے حق میں نہیں،کوشش کرینگے کہ یہ بل واپس ہو،پیپلز پارٹی اپنے صحافی بھائیوں کیساتھ کھڑی ہے، ہم کسی میڈیا دشمن قانون کا حصہ نہیں بنیں گے،بجٹ کی تیاری اور ہتک عزت بل پر پیپلز پارٹی سے مشاورت نہیں کی گئی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیپلز سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن میں رکن پنجاب اسمبلی نیلم جبار،نائب صدور میاں اظہر حسن ڈار،میاں ایوب،احسن رضوی کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر رانا جواد،ذیشان شامی، حسن اشرف بھٹی بھی موجود تھے۔حسن مر تضیٰ نے کہا کہ صحافیوں کا احتجاج سر آنکھوں پر،پیپلز پارٹی ہتک عزت ہر میڈیا کو مطمئن کرنیکی پوری کوشش کرے گی،ہم نے بل پر دستخط اس لیے نہیں کیے کیونکہ ہم اس میں میڈیا کی ترامیم شامل کرانا چاہتے ہیں،پیپلز پارٹی کے اختلافی نوٹ پر بات ہو رہی ہے مگر بل پاس کرنے والوں سے سوال نہیں کیا جا رہا۔ حسن مرتضی نے کہا کہ (ن) لیگ کو اس لیے ووٹ نہیں دیا کہ بجٹ کچن میں تیار کر لیں،آپ نے بجٹ تجاویز تیار کرتے وقت پیپلز پارتی کو اعتماد میں لینا پسند نہیں کیا۔حکومت ایسے اقدامات نہ کرے جن سے میڈیا مچئن ہے نہ عوام۔ جنرل سیکرٹری پی پی وسطی پنجاب نے کہا کہ پاکستان کی تاریخ کا یہ پہلا گم سم بجٹ لایا جا رہا ہے پیپلز پارٹی نے اپنا نقصان کر کے حکومت کیساتھ کھڑے ہونے کا فیصلہ کیا،ایک سوال کے جواب میں حسن نے کہا کہ ایشوز پر اتحاد بنتے ہیں نہ ٹوٹتے ہیں۔پیپلز پارٹی ہومیو پیتھک جماعت نہیں۔پیپلز پارٹی پنجاب کے بجٹ پر اپنا آئینی کردار ادا کرے گی۔حکومت میں شمولیت کا فیصلہ سی ای سی کی منظوری سے مشروط ہے۔فی الحال ایسا کوئی ارادہ نہیں،چاہتے ہیں کہ پنجاب میں تنخواہوں اور پنشن میں 25فیصد اضافہ کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ ہم تھرڈ پارٹی میڈیا کو سمجھتے ہیں،پتہ نہیں آپ تیسرا کسے سمجھتے ہیں۔

پیپلز پارٹی

مزید :

صفحہ آخر -