لاہورہائیکورٹ، سکول ٹیچر کی ڈی ایس پی کیخلاف رٹ درخواست، آر پی او کو مسائل کی دادرسی کا حکم، معاملات فائنل

لاہورہائیکورٹ، سکول ٹیچر کی ڈی ایس پی کیخلاف رٹ درخواست، آر پی او کو مسائل کی ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ملتان(خصو صی   ر پورٹر) لاھور ہائی کورٹ ملتان بنچ کے مسٹر جسٹس سردار محمد سرفراز ڈوگر نے پیٹیشنر قربان علی سکول ٹیچر کی ڈی ایس پی جلال پور پیروالہ مہر بشیراحمد کے خلاف رٹ درخواست نمٹاتے ہوئے ریجنل پولیس آفیسر ملتان کو ہدایت کی ہے وہ ذاتی طور پر درخواست(بقیہ نمبر13صفحہ7پر)

 کی سماعت کرکے  دادرسی کریں۔ عدالت عالیہ نے اس موقع پر مزید ھدایات جاری کی کہ اس کے بلینک چیک اور سادہ کاغذات پر کئے گئے دستخط بھی واپس کروائے جائیں۔ پیٹیشنر کے وکیل ایم۔آر فخر بلوچ نے  عدالت عالیہ کو آگاہ کیا کہ قربان علی نے احمد بخش سے 22 کنال 12 مرلے اراضی 7 ستمبر 2021 کو خرید کی۔ جس کے تمام قانونی مراحل طے کرنے کے بعد انتقال درج ہوا۔بعد ازاں احمد بخش کی ماں نے ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں رٹ دائر کی کہ اس کے بیٹے کو قربان علی نے اغوا کرلیا۔لیکن پولیس نے اسے اسکے اپنے گھر سے برآمد کرکے عدالت کے روبرو پیش کردیا۔عدالت نے قراردیا کہ اغوا کی جھوٹی کہانی گھڑی گئی ہے۔اصل تنازعہ اراضی کا ہے۔اس کے بعد احمد بخش کے بھائی  مدنی نے دیوانی مقدمہ دائر کردیا کہ اس کا احمد بخش کے ساتھ اراضی کا زبانی معاہدہ ہوگیاتھا۔مگر عدالت نے اس کا حکم امتناعی خارج کردیا۔اب انہوں نے ڈی ایس پی مہر بشیر احمد کی ملی بھگت سے یہ درخواست دی کہ اسے اراضی کی رقم  نہیں ملی۔ ڈی ایس پی نے 17 مئی کو طلب کرکے قربان علی سے پانچ لاکھ روپے کا مطالبہ کیا بصورت دیگر اس کی ملازمت ختم کرانے اور جھوٹے مقدمہ میں ملوث کرنے کی دھمکی دی۔ بعدازاں ڈی ایس پی نے اس سے بلینک چیک لیا اور سادہ کاغذات پر دستخط اور انگوٹھے لگوائے۔اور اس کے ضمانتی وکیل سلطان حیدر سے بھی ایک چیک لیلیا۔رات کو ساڑھے بارہ بجے پولیس کو حکم دیا کہ قربان علی کو ضلع لودھراں کے تھانہ قریشی والا کے ایس ایچ او کے حوالے کردو۔مگر پولیس ملازمین نے اسے لودھراں لے جاکر آزاد کردیا۔اب ڈی ایس پی پانچ لاکھ روپے کی وصولی کیلئے چھاپے مروارہاہے۔