علی امین گنڈاپور کی مجبوری کا احساس ہے،اور بڑھکیں ماریں،فیصل کنڈی

علی امین گنڈاپور کی مجبوری کا احساس ہے،اور بڑھکیں ماریں،فیصل کنڈی
علی امین گنڈاپور کی مجبوری کا احساس ہے،اور بڑھکیں ماریں،فیصل کنڈی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

پشاور (ڈیلی پاکستان آن لائن)گورنر خیبر پختونخوا فیصل کریم کنڈی نے کہا ہے کہ وزیرِ اعلیٰ علی امین گنڈاپور کے بیانات کامیڈی شوز ہوتے ہیں۔

پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فیصل کریم کنڈی نے کہا کہ ایک بات تو واضح ہے کہ این آر او نہیں ملنا، میدان بھی حاضر ہے، گھوڑا بھی حاضر ہے، ناچنے والے گھوڑے میدان میں نہیں دوڑتے۔میں جس گورنر ہاؤس میں ہوں آئین اور قانون کے مطابق اس کا تحفظ کروں گا، وزیرِ اعلیٰ کے بیانات سنتے ہیں تو مزا آتا ہے، ہم ریلیکس ہو جاتے ہیں،  وزیرِ اعلیٰ کو چاہیے سنجیدگی سے عوامی مینڈیٹ پر عمل درآمد کریں۔

فیصل کریم کنڈی کا کہنا ہے کہ صوبے کے حالات دن بدن خراب ہو رہے ہیں، لوگ اغواء ہو رہے ہیں، بھتے کی پرچیاں مل رہی ہیں آج تک اپیکس کمیٹی کی میٹنگ نہیں ہوئی، وزیرِ اعلیٰ اپنا ضلع نہیں سنبھال سکتے اور دیگر جگہوں پر جلسوں میں لوگوں کو للکار رہے ہیں۔

گورنر خیبر پختونخوا نے کہا کہ آپ سیاسی بیان ضرور دیں، مجھے بھی علم ہے آپ کی مجبوری ہے، اندر میٹنگ میں کہتے ہیں سرکاری وزیرِ اعلیٰ ہوں باہر پی ٹی آئی کا وزیرِ اعلیٰ بننا مجبوری ہے، ہمیں ان کی مجبوری کا احساس ہے، اجازت دیتے ہیں اس سے بھی زیادہ بڑھکیں ماریں۔

ان کا کہنا ہے کہ مجھے پتہ چلا ہے کہ2017ء سے ارباب نیاز اسٹیڈیم پر تعمیراتی کام مکمل نہ ہوسکا، ہمارا یہ حال ہے کہ صوبے میں ایک گراؤنڈ نہ بن سکا۔15 سال ہوگئے ہیں کہ پشاور میں ایک لیگ بھی منعقد نہیں ہوئی، دعویداروں نے بہت دعوے کیے کہ ہم کھیلوں کے میدان آباد کریں گے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ کے پی حکومت کے پاس وسائل نہیں تو گراؤنڈ پی سی بی کے حوالے کر دے،  اگر پیسے ہیں تو صوبائی حکومت گراؤنڈ بنا دے،  مجھے نہیں لگتا کہ یہ گراؤنڈ جلد مکمل کر لیا جائے گا۔