آکسفورڈ کی تعلیم یافتہ دنیا کی مطلوب ترین خاتون روجا اگناتوواکی کہانی سامنے آگئی 

آکسفورڈ کی تعلیم یافتہ دنیا کی مطلوب ترین خاتون روجا اگناتوواکی کہانی ...
آکسفورڈ کی تعلیم یافتہ دنیا کی مطلوب ترین خاتون روجا اگناتوواکی کہانی سامنے آگئی 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

برلن(مانیٹرنگ ڈیسک) جرمنی کی روجا اگناتووا نامی خاتون کی کہانی ایک عبرت کی کہانی ہے، جس نے آکسفورڈ یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی اور آج وہ دنیا کی مطلوب ترین خاتون ہے۔ روجا اگناتووا کی پیدائش بلغاریہ میں ہوئی تاہم وہ جرمنی کی شہری ہے۔ آکسفورڈ سے تعلیم حاصل کرنے کے بعد اس نے کنسلٹنٹ کی ملازمت کی مگر پھر اس نے کرپٹو کرنسی کے ذریعے فراڈ کرنے اور لوگوں کو لوٹنے کی منصوبہ بندی کی۔
روجا نے ’ون کوائن ‘ کے نام سے ایک کرپٹو کرنسی سکیم تیار کیا اور اس کے ذریعے سرمایہ کاروں سے ساڑھے 4ارب ڈالر کی خطیر رقم لوٹ لی۔ یہ تاریخ کے سب سے بڑے مالیاتی فراڈز میں سے ایک ہے۔ فراڈ کرنے کے بعد سے روجا لاپتہ ہے اور بین الاقوامی میڈیا پر اس کی شہرت ’کرپٹو کوئین‘ کے نام سے ہو رہی ہے۔ 
روجا ایک متوسط فیملی میں پیدا ہوئی۔ اس کا باپ انجینئر اور ماں ٹیچر تھی۔ اس نے آکسفورڈ یونیورسٹی سے یورپین لاء میں تعلیم حاصل کی۔ اس نے 2014ء میں ’ون کوائن‘ کی بنیاد رکھی ، جس کے متعلق اس کا دعویٰ تھا کہ یہ ڈیجیٹل کرنسی بٹ کوائن کو پیچھے چھوڑ جائے گی۔
ون کوائن کرپٹو کرنسی تیزی سے مقبول ہوئی کیونکہ اس میں شرح منافع بہت زیادہ تھی۔ چنانچہ دنیا بھر سے سرمایہ کار اس میں سرمایہ لگانے لگے۔ کرنسی کی مقبولیت ایسی بڑھی کہ 2016ء میں روجا اگناتووا نے لندن کے ومبلے ایرینا میں ایک کانفرنس کا انعقاد کیا اور ون کوائن کے متعلق بلندو بانگ دعوے کیے مگر حقیقت میں یہ جعلی کرنسی تھی۔ بٹ کوائن اور دیگر قانونی ڈیجیٹل کرنسیاںبلاک چین ٹیکنالوجی کے ذریعے محفوظ ہوتی ہیں لیکن ون کوائن کی کوئی حقیقی ویلیو نہیں تھی۔
2019ء میں امریکی حکام نے روجا اگناتووا کو وائر فراڈ، سکیورٹیز فراڈ اور منی لانڈرنگ کے موردالزام ٹھہرایا اور ایف بی آئی کی طرف سے جون 2022ء میں اس کا نام دنیا کے 10مطلوب ترین افراد کی فہرست میں شامل کیا گیا۔ ون کوائن کے شریک بانی سیبسٹیان رین ووڈ کو 2018ء میں تھائی لینڈ سے گرفتار کرکے امریکہ لایا گیا۔
 اس فراڈ میں روجا کا چھوٹا بھائی کانسٹنٹین اگناتوف بھی شامل تھا، جسے مارچ 2019ء میں لاس اینجلس سے گرفتار کیا گیا۔ ان لوگوں کو عدالت سے سزائیں سنائی جا چکی ہیں تاہم روجا اگناتووا تاحال مفرور ہے اور کوئی نہیں جانتا کہ وہ دنیا میں کہاں ہے۔ 
خیال کیا جاتا ہے کہ اس کے جرمن پاسپورٹ ہے اور وہ متحدہ عرب امارات، بلغاریہ، جرمنی، روس، یونان یا مشرقی یورپ کے کسی ملک میں موجود ہے۔ ایف بی آئی کی طرف سے وارننگ جاری کی گئی ہے کہ روجا اگناتووا ممکنہ طور پر مسلح گارڈز کے ساتھ سفر کرتی ہو گی اور اس نے پلاسٹک سرجری کے ذریعے اپنی شکل تبدیل کروا لی ہو گی۔