کام بیچ میں چھوڑ کر جانے کا اختیار بھی تھا لیکن اسے ناکامی تصور کیا جاتا اور یہ دھبہ باقی ساری زندگی لگا رہتا، یہیں سے بے خواب راتوں کا سلسلہ شروع  ہو گیا

کام بیچ میں چھوڑ کر جانے کا اختیار بھی تھا لیکن اسے ناکامی تصور کیا جاتا اور ...
کام بیچ میں چھوڑ کر جانے کا اختیار بھی تھا لیکن اسے ناکامی تصور کیا جاتا اور یہ دھبہ باقی ساری زندگی لگا رہتا، یہیں سے بے خواب راتوں کا سلسلہ شروع  ہو گیا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

مصنف:محمد اسلم مغل 
تزئین و ترتیب: محمد سعید جاوید 
 قسط:129
دوسری بڑی خوبی اس میں یہ تھی کہ اس کی مادری زبان عربی تھی اور یہی اس ملک کی زبان بھی تھی۔ لیکن وہ بہت گرم مزاج تھا۔ اس کے علاوہ کچھ جز وقتی ماہرین بھی تھے جن کی کمزوریوں اور طاقتوں کو میں نہیں جانتا تھا ان سارے حالات کا جائزہ لے کر میں اس نتیجے پر پہنچا کہ میں نے اس پراجیکٹ میں شامل ہو کر اپنی زندگی کی سب سے بڑی غلطی کی ہے۔ پراجیکٹ کے 8 مہینے ضائع کر دئیے تھے اور بہتری کے آثار نظر نہیں آ رہے تھے۔ میری زندگی میں بہت سارے سخت مقامات آئے لیکن یہ صورتحال میں نے پہلے کبھی نہ دیکھی تھی۔ میں یہاں ایک کنسلٹنٹ کی حیثیت سے آیا تھا اور اب مجھے معمولی اور تھکے ہوئے سٹاف کے ساتھ اچھے نتائج دینا تھے جو دور دور تک نظر نہیں آ رہے تھے۔ ہر چند کہ ہمارے معاہدے کے مطابق میرے پاس کام بیچ میں چھوڑ کر جانے کا اختیار بھی تھا لیکن مجھے یہ قبول نہیں تھا کیونکہ اسے میری ناکامی تصور کیا جاتا اور یہ دھبہ باقی ساری زندگی مجھ پر لگا رہتا۔ بس یہیں سے میری بے خواب راتوں کا سلسلہ شروع  ہو گیا۔
کچھ ہفتوں بعد وسیمہ اور مدیحہ بھی مجھ سے آن ملی تھیں۔ اور یوں میری زندگی ایک دفعہ پھر معمول پر آگئی تھی اور اب مجھے وقت پر اچھا کھانا ملتا اور میری صحیح دیکھ بھال بھی ہونے لگی تھی۔ لیکن میں نے اس بات کا خیال رکھا کہ ان کو کام کے متعلق اپنی پریشانیوں کے بارے کچھ نہ بتاؤں۔ اب میں دوپہر کو وقفے کے دوران اپنے فلیٹ میں آتا اور گھر کے بنے ہوئے بہترین کھانے سے لطف اندوز ہوتا تھا۔ جارج بھی وہیں انٹر کانٹی نینٹل ہوٹل میں رہتا تھا۔ وہاں اور کوئی تو تھا نہیں اس لیے میں نے جارج کو اپنا دوست بنا لیا۔ اور اب میں اس کے ساتھ ہوٹل کی نچلی منزل پر واقع جمنازیم چلا جاتا تھا، تیراکی کرتا، پھر کچھ دیر ساؤنا میں بیٹھتا جس سے ذہن اور بدن میں کچھ تازگی آجاتی تھی اور مجھے کام کی تھکاوٹ اوربے چینی سے نجات مل جاتی۔ وہاں میرے ایک مقامی نوجوان سالم سے بھی بہت اچھے تعلقات بن گئے تھے جو میونسپلٹی کی طرف سے بطور ماہر مقرر تھا۔اس کے ساتھ یہ رفاقت آگے چل کر پروجیکٹ کو اچھی رفتار سے آگے چلانے میں بہت مدد گار ثابت ہوئی اور یوں ہم گہرے دوست بھی بن گئے۔ ۱س نے مجھے اپنا استاد مان لیا تھا۔ جب مجھے اس مشکل صورت حال کا مکمل ادراک ہو گیا تو میں نے اپنی ساری توجہ پروجیکٹ کے لیے مناسب انسانی وسائل اور حالات کی درستی کی طرف مرکوز کردی اور پورے جوش و خروش سے پروجیکٹ کو کامیاب کرنے کے لیے کوششیں شروع کر دیں مجھے کمپیوٹر پر عبور حاصل نہیں تھا۔ اپنی اس کمزوری پر قابو پونے کے لیے میں نے شام کو کمپیو ٹرکی کلاسیں لینا شروع کردیں۔ جارج کی طرف سے بھی مجھے بہت تعاون مل رہا تھا۔ 
دوبئی کی ثقافتی زندگی بہت شاندار تھی۔ سعودی عرب کے مقابلے میں یہ کھلے ماحول کا ایک ملک تھا۔ یہاں سینما، کلب اور سیر و تفریح کے لیے بہت سارے مقامات تھے۔ یہاں خواتین کی نقل و حرکت پر کسی قسم کی قدغن نہیں تھی اور وہ آزادانہ طور پر باہر آ جا سکتی تھیں۔ وسیمہ اور مدیحہ نے اس آزادانہ ماحول سے فائدہ اٹھایا۔ سعودی عرب میں کسی خاتون کا تنہا باہر نکلنا ممکن نہ تھا، لیکن دوبئی میں حفاظتی نظام بہت اونچے درجے کا اور شاندار تھا۔ حقیقت میں یہ دنیا کے ان پانچ ملکوں میں شامل تھا جو سب سے زیادہ محفوظ سمجھے جاتے تھے۔ جہاں اکیلی لڑکی آدھی رات کے وقت بھی بلا خوف و خطر سڑکوں پر گھوم پھر سکتی تھی۔ اور سیکورٹی کا یہی احساس دنیا بھر سے سیاحوں کو یہاں کھینچ لاتا ہے۔ (جاری ہے)
نوٹ: یہ کتاب ”بُک ہوم“ نے شائع کی ہے (جملہ حقوق محفوط ہیں)ادارے کا مصنف کی آراء سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

مزید :

ادب وثقافت -