پاکستان کے بعد وہ ملک جہاں چین نے 30 ارب ڈالر لگادئیے، یہ کونسی جگہ ہے؟ جان کر امریکہ کو پسینے آجائیں گے

پاکستان کے بعد وہ ملک جہاں چین نے 30 ارب ڈالر لگادئیے، یہ کونسی جگہ ہے؟ جان کر ...
پاکستان کے بعد وہ ملک جہاں چین نے 30 ارب ڈالر لگادئیے، یہ کونسی جگہ ہے؟ جان کر امریکہ کو پسینے آجائیں گے

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک)سپر پاور امریکہ کے لئے اس سے بڑی پریشانی کیا ہو سکتی ہے کہ اس کی تمام تر مخالفت اور سازشوں کے باوجود چین نہ صرف معاشی طور پر ہرگزرتے دن کے ساتھ مضبوط ہورہا ہے بلکہ عالمی سطح پر اس کا اثر ورسوخ بھی تیزی سے بڑھ رہا ہے۔ چین کی تیزی سے بڑھتی طاقت کی ایک نمایاں مثال ترقی پزیر ممالک کے لئے اس کی بھاری مالی مدد اور ان ممالک کے ساتھ مضبوط ہوتے تعلقات ہیں۔ افریقی ممالک، جو کبھی امریکا کی خیرات کا انتظار کیا کرتے تھے، کو بھی چین نے اربوں ڈالر کی سرمایہ کاری سے اپنے ساتھ ملا لیاہے۔افریقی ممالک کے لئے اس کی جانب سے 30 ارب ڈالر (تقریباً 30 کھرب پاکستانی روپے) کی خطیر رقم کی فراہمی بدلتے ہوئے عالمی حالات کا واضح اشارہ ہے۔

ویب سائٹ افریقہ نیوز کی رپورٹ کے مطابق چین نے 2015ءمیں اعلان کیا تھا کہ افریقی ممالک کی مدد کے لئے 60 ارب ڈالر (تقریباً 60 کھرب پاکستانی روپے) دئیے جائیں گے۔ یہ اعلان جنوبی افریقہ کے شہر جوہانسبرگ میں منعقد ہونے والے چین افریقہ تعاون فورم میں کیا گیا تھا۔ چینی وزیر خارجہ نے یہ وعدہ بھی کیا تھا کہ وہ افریقی ممالک کے ساتھ تعاون جاری رکھیں گے، چاہے جیسے بھی حالات کا سامنا کرنا پڑے۔ اب انہوں نے بتایا ہے کہ افریقہ کی ترقی کے لئے وقف کئے گئے 60 عرب ڈالر میں سے تقریباً نصف رقم ان ممالک کو دی جاچکی ہے۔

’پاکستان ہمارا دوست ہے اس لئے اس کے ایٹمی پروگرام کیلئے یہ کام کرکے رہیں گے‘ چین نے دبنگ اعلان کردیا، ایک مرتبہ پھر بہترین دوست ہونے کا ثبوت دے دیا

چینی وزیر خارجہ کا کہنا تھا ”چین اور افریقہ قریبی تعلق رکھنے والی برادری ہیں اور ان کا مستقبل ایک ہے۔ عالمی معیشت یا بین الاقوامی حالات جو بھی ہوں افریقی ممالک کے ساتھ چین کا تعاون جاری رہے گا۔ افریقہ کے لئے چین کی مدد میں کوئی کمی نہیں آئے گی۔“

اس موقع پر چینی وزیر خارجہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ چین کے تعاون کی نمایاں خوبی یہ بھی ہے کہ چین ہمیشہ اپنے الفاظ پر قائم رہتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ چینی تعاون سے ادیس ابابا سے جبوتی تک ریلوے لائن کی تعمیر مکمل کی جاچکی ہے، اور ممباسا سے نیروبی تک ریلوے لائن کی تکمیل جلد متوقع ہے۔ اسی طرح کانگو، تنزانیہ اور دیگر افریقی ممالک میں بھی درجنوں منصوبوں پر کام تیزی سے جاری ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -