فروری کے دوران امریکا میں 3 لاکھ نئے افراد کو روزگار ملا

فروری کے دوران امریکا میں 3 لاکھ نئے افراد کو روزگار ملا

واشنگٹن (اے پی پی) امریکا نے کہا ہے کہ فروری کے دوران ملک میں 3 لاکھ نئے افراد کو روزگار ملا تاہم تنخواہوں میں اضافے کے سست صورتحال کے باعث افراط زر میں خاطر خواہ اضافہ نہیں ہوسکا۔وزارت محنت کی جانب سے گزشتہ روز جاری ہونے والی رپورٹ کے مطابق فروری کے دوران ملک میں غیر زرعی روزگار کے 3 لاکھ 13 ہزار نئے مواقع پیدا ہوئے جو جولائی 2016 ء کے بعد روزگار کے نئے مواقع کی سب سے بڑی تعداد ہے جس کی وجہ تعمیرات کے شعبے میں 2007 ء کے بعد سرگرمیوں میں سب سے زیادہ تیزی ہے۔فروری کے دوران روزگار کے مواقع میں ہونے والا اضافہ کام کرنے کے قابل افراد کے مطلوبہ اوسط ماہانہ ہدف سے تین گنا ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ فروری کے دوران روزگار کے مواقع میں تیز اضافے کی وجہ اندرون ملک طلب میں اضافہ، صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی 1.5 ٹریلین ڈالر کی انکم ٹیکس کٹوتی اور عالمی اقتصادی ترقی ہے۔انھوں نے کہا کہ ماہ کے دوران اوسط فی گھنٹہ اجرت 4 سینٹ (0.1 فیصد) اضافے کے ساتھ 26.75 ڈالر فی گھنٹہ رہی۔جنوری کے دوران اوسط فی گھنٹہ اجرت میں 0.3 فیصد اضافہ ہوا تھا۔فروری کے دوران سالانہ بنیادوں پر فی گھنٹہ اوسط اجرت کی شرح میں 2.6 فیصد اضافہ ہوا۔ جنوری میں اضافے کی شرح 2.8 فیصد رہی تھی۔ماہ کے دوران ہفتہ وار کام کا دورانیہ 34.5 گھنٹے رہا جو جنوری میں 34.4 گھنٹے رہا تھا۔

مزید : کامرس