چیف جسٹس قصور کی زینب کے والد کو ہراسا ں کرنے کا نوٹس لیں،نوراللہ صدیقی

چیف جسٹس قصور کی زینب کے والد کو ہراسا ں کرنے کا نوٹس لیں،نوراللہ صدیقی

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)پاکستان عوامی تحریک کے ترجمان مرکزی سیکرٹری اطلاعات نوراللہ صدیقی نے کہا ہے کہ چیف جسٹس معصوم بچی زینب کے والد حاجی امین انصاری کو ہراساں کرنے کا نوٹس لیں۔ ہراساں کرنے والوں کے خلاف دہشتگردی کی دفعات کے تحت مقدمات درج کیے جائیں۔ ترجمان نے کہا کہ حاجی امین انصاری نے ہراساں کیے جانے پر مجبور ہو کر چیف جسٹس ثاقب نثار سے تحفظ کی اپیل کی ہے اور اس کے ساتھ ساتھ درندے عمران کے سہولت کاروں سے تفتیش کرنے کی بھی استدعا کی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ اگرچہ قاتل عمران کا سپیڈی ٹرائل اور سزا کا فیصلہ خوش آئند ہے تاہم اس سانحہ کے دیگر سہولت کاروں کا تاحال گرفت میں نہ آنا لمحہ فکریہ ہے۔ یہ شکوک و شبہات ابھی تک موجود ہیں کہ قاتل عمران تنہا نہیں تھا۔ حاجی امین انصاری نے پولیس کی تفتیش پر عدم اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ ترجمان نے کہا کہ پنجاب پولیس نے زینب قتل کیس کی تفتیش میں انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے، عجلت میں کی گئی تفتیش سے لگ رہا ہے کہ کسی کو بچانے کی کوشش ہورہی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ معصوم زینب کئی روز سے قاتل عمران کی تحویل میں رہی، اس نے اسے کہاں رکھا؟ کون لوگ اس کی سہولت کاری کرتے رہے۔ ان سوالات کے جوابات ملنے چاہئیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1