لندن:سابق روسی جاسوس اور اس کی بیٹی کو زہر دینے کا معاملہ فوج کے حوالے

لندن:سابق روسی جاسوس اور اس کی بیٹی کو زہر دینے کا معاملہ فوج کے حوالے

لندن (اے این این)برطانیہ میں سابق روسی جاسوس اور اسکی بیٹی کو زہر دے کر مارنے کی کوشش پرتحقیقات کیلئے فوج کاخصوصی دستہ بھیج دیا گیا۔ اعصابی گیس سے متعلق رپورٹ کے بعد برطانیہ(بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

کی جانب سے پیر کو روس کے خلاف پابندیوں کا اعلان متوقع ہے۔روسی وزیرخارجہ نے ڈبل ایجنٹ کو زہر دینے کے الزام کوپراپیگنڈہ قراردیدیا ۔برطانوی پولیس نے کہا ہے کہ سابق روسی ایجنٹ سرگئی سکرپل اور ان کی بیٹی پر کیے گئے کیمیکل حملے کے بعد تقریبا 21 افراد کو طبی مدد فراہم کی جا چکی ہے ۔چھیاسٹھ سالہ سابق روسی ڈبل ایجنٹ سرگئی سکرِپل اور ان کی 33 سالہ بیٹی اس حملے کے بعد سے شدید بیمار ہیں اور اسپتال میں زیر علاج ہیں ۔پولیس کاکہنا ہے کہ سابق روسی جاسوس اور اس کی بیٹی کو اعصاب متاثر کرنے والے کیمیکل مواد سے نشانہ بنایا گیا ہے ۔حکام اس کوشش میں ہیں کہ وہ سیلس بری میں ہوئے اس حملے کے ذمہ داروں کا تعین کرسکیں جبکہ برطانوی سیاست دانوں کا کہنا ہے حملے کا طریقہ کار روسی انداز کا ہے ۔

حکام کا کہنا ہے کہ سرگئی کی بیٹی گزشتہ ہفتے ماسکو سے برطانیہ پہنچی تھی اور ہوسکتا ہے کہ وہ لاعلمی میں اپنے ہمراہ لائے جانے والے تحائف میں اعصاب متاثر کرنے والا کمیائی مواد بھی لے آئی ہو تاہم اس حوالے سے ابھی تحقیقات جاری ہیں ۔برطانوی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ واقعے کی تحقیقات کیلئے 180 فوجیوں کو متاثرہ علاقے میں تعینات کیا گیا ہے جنہوں نے متاثرہ علاقے کو حصار میں لے کر وہاں فرانزک ٹیسٹ شروع کردیے ہیں ۔۔ تاہم ارد گرد آباد لوگوں کو اس سے خوفزدہ ہونے کی ضرورت نہیں ۔دوسری جانب روسی وزیر خارجہ سرگئی لاروف نے حملے کے الزام کو بے بنیاد پروپیگنڈا قرار دیا ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ اب تک جو کچھ کہا گیا ہے وہ صرف ٹی وی رپورٹس ہیں ۔ اس بارے میں کوئی ٹھوس ثبوت پیش نہیں کیا گیا ہے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...