’یہ سب تمہاری کرپشن ہے‘ روسی ارب پتی شخص صدر پیوٹن کے سامنے ہی پھٹ پڑا، لیکن پھر اس آدمی کے ساتھ کیا کیا گیا؟ اس کا انجام جان کر ہی آپ کانپ اُٹھیں گے

’یہ سب تمہاری کرپشن ہے‘ روسی ارب پتی شخص صدر پیوٹن کے سامنے ہی پھٹ پڑا، لیکن ...
’یہ سب تمہاری کرپشن ہے‘ روسی ارب پتی شخص صدر پیوٹن کے سامنے ہی پھٹ پڑا، لیکن پھر اس آدمی کے ساتھ کیا کیا گیا؟ اس کا انجام جان کر ہی آپ کانپ اُٹھیں گے

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک) روس میں 18مارچ کو صدارتی الیکشن ہونے جا رہے ہیں اور غالب امکان ہے کہ ولادی میر پیوٹن ہی دوبارہ صدر منتخب ہو جائیں گے۔ تاہم برطانوی نشریاتی ادارے نے گزشتہ روز ایک ڈاکومنٹری نشر کی ہے جس میں 2003ءکی ایک ویڈیو بھی شامل ہے جس میں روس کا ایک ارب پتی شخص ملک میں ہونے والی کرپشن پر ولادی میر پیوٹن کے سامنے پھٹ پڑا اور پھر اس شخص کے ساتھ پیوٹن نے کیا کیا؟ اس کا انجام جان کر ڈاکومنٹری دیکھنے والا ہر شخص کانپ اٹھا۔ ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق میخائیل خودورکوسکی نامی یہ ارب پتی شخص تیل کمپنی ’یوکوس‘ (Yukos)کا مالک اور دنیا کا چوتھا امیر ترین آدمی تھا۔

میخائیل نے صدر پیوٹن کے سامنے ایک میٹنگ میں کرپشن پر شدید تنقید کرتے ہوئے صدر پیوٹن ہی کو اس کا ذمہ دار قرار دے دیا تھا۔ اس نے کہا کہ ”ملک میں سالانہ 30ارب ڈالر کی کرپشن ہو رہی ہے جو جی ڈی پی کا 10سے 12فیصد بنتی ہے۔ “ اس دوران میخائیل نے تیل کے ایک بڑے معاہدے کی مثال دی جس میں بڑی کرپشن ہوئی تھی تاہم صدر پیوٹن اس معاہدے کے بارے میں سب کچھ جانتے تھے۔ اس کے جواب میں پیوٹن نے اسے کہا کہ ”اس معاہدے سے تمہاری ہی کمپنی کو فائدہ پہنچا ہے۔“ اس کے چند دن بعد ہی میخائیل کو گرفتار کرکے جیل میں ڈال دیا گیا اور اس کا تمام کاروبار اس سے چھین کر فروخت کر دیا گیا۔ وہ کس شخص کو فروخت کیا گیا؟ اس کا خریدار کوئی اور نہیں بلکہ ولادی میرپیوٹن کا قریبی اتحادی تھا۔

مزید : بین الاقوامی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...