ادھار پر جوتے لے جانے والی لڑکی کے ساتھ سیلز مین نے ایساہاتھ کر دیاکہ کوئی لڑکی پھر کبھی ایسا سوچے گی بھی نہیں 

ادھار پر جوتے لے جانے والی لڑکی کے ساتھ سیلز مین نے ایساہاتھ کر دیاکہ کوئی ...
ادھار پر جوتے لے جانے والی لڑکی کے ساتھ سیلز مین نے ایساہاتھ کر دیاکہ کوئی لڑکی پھر کبھی ایسا سوچے گی بھی نہیں 

  

ایک سیلز مین نے ایک لڑکی کو سینڈل کی قیمت بارہ سو روپے بتائی مگر لڑکی کے پاس صرف ہزار روپیہ تھا ۔ لہذا اس نے وہی روپے سیلز مین کو دیئے اور کہا ’’ باقی دو سو روپے کل آ کر دے دوں گی۔‘‘

سیلزمین بولا’’ میڈم ہم ادھار نہیں کرسکتے‘‘

’’ ارے ایسا بھی کیا،سارے پیسوں کا ادھار تو نہیں،دو سو کا ہی ادھار کیا ہے ناں.‘‘

سیلز مین نے روپے لے کر سینڈل کا ڈبہ لڑکی کے حوالے کر دیا اور وہ چلی گئی۔

دکان کے مالک نے سیلز مین پر غصہ کرتے ہوئے کہا ’’ تم انتہائی بے وقوف ہو، اب وہ کبھی نہیں آئے گی۔‘‘

’’ اس کے تو اچھے بھی آئیں گے۔‘‘ سیلز مین نے مسکراتے ہوئے کہا۔’’ میں نے اسے دونوں جوتے بائیں پیر کے دیئے ہیں۔‘‘

روحانہ اسلام ،کراچی

مزید : لافٹر