گردہ ،مثانہ کی بیماریوں سے بچنے کیلئے آگاہی مہم ناگزیر ہے،پروفیسر نذیر

گردہ ،مثانہ کی بیماریوں سے بچنے کیلئے آگاہی مہم ناگزیر ہے،پروفیسر نذیر

لاہور(سٹی رپورٹر)پاکستان سوسائٹی آف یورالوجیکل سرجنز کے زیر اہتمام ، انٹر نیشنل کانفرنس اختتام پذیر ، اس تین یورو سمٹ 2019کانفرنس میں 50 سٹیٹ آف دی آرٹ لیکچرز ، 30 ریسرچ پیپرز اور 12 ورکشاپس منعقد ہوئیں جو خود ایک ریکارڈ ہے ۔ اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان سوسائٹی آف یورالوجیکل سرجنز کے صدر اور لاہور جنرل ہسپتال کے پروفیسر آف یورالوجی پروفیسر ڈاکٹر محمد نذیر نے کہا کہ یورالوجی کے مریضوں کی بھاری تعداد کے مقابلے میں ماہر سرجنز کی تعداد آٹے میں نمک کے برابر ہے جس بارے میں فوری طور پر اقدامات ہونے چاہئیں۔انہوں اس امر کی بھی نشاندہی کی کہ لوگوں میں گردوں اور مثانے کی بیماریوں کے اسباب اور ان سے بچاؤکے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کی بھی ضرورت ہے ۔پروفیسر محمد نذیر نے کہا کہ نوجوانوں میں دیسی کشتوں کے استعمال اور عطائیوں و نیم حکیموں سے رجوع کر نے کے عمل نے بھی یورالوجی کے شعبے میں مریضوں کی تعداد میں اضافہ کیا ہے

۔انہوں نے کہا کہ ہر شہری کو حفاظتی تدابیر اورپرہیز کے ساتھ ساتھ سال میں دو مرتبہ مکمل میڈیکل چیک اپ کرانا چاہیے ۔ انہوں نے اس طرز کی یورالوجیکل کانفرنس کے انعقاد کو سراہا جس میں جونیئر ڈاکٹروں کو اپنے سینئرز کے تجربات سے مستفید ہونیکا موقع ملتا ہے اور وہ ایک ہی چھت تلے مختلف تجربات سے آگاہ ہوتے ہیں۔

انہوں نے اس امر پر مسرت کا اظہار کیا کہ اب لاہور جنرل ہسپتال میں روایتی طریقوں سے ہٹ کر جدید طریقہ علاج موجود ہے اور بالخصوص یورالوجی کے شعبے میں پیوند کاری سے دیگر بیماریوں میں مبتلا مریضوں کو علاج معالجہ کی بہترین سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں ۔ پروفیسر ڈاکٹر محمد نذیر نے کہا کہ بلڈ پریشر ، شوگر اور یورک ایسڈ بھی گردوں اور مثانے کی بیماریوں کا باعث بنتے ہیں لہذا ہم اپنی خوراک اور معمولات زندگی پر توجہ مرکوز کر کے صحت مند زندگی گزار سکتے ہیں اور یہی اس کانفرنس کا پیغام بھی ہے

مزید : میٹروپولیٹن 1